.

پاکستان کے راستے ایران کو غیرملکی کرنسی کی اسمگلنگ کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے ذرائع ابلاغ کے مطابق ایران کی سرحد سے بھاری مقدار میں غیرملکی کرنسی ایران اسمگل کی جا رہی ہے۔

مقامی اخبارات کے مطابق غیرملکی کرنسی کی بھاری مقدار ایران اسمگل کرنے کی کوششیں حالیہ مہینوں کے دوران کی گئی ہیں۔ یہ اسمگلنگ دونوں ملکوں کی بری سرحد سے کی جاتی رہی ہے۔

اخباری اطلاعات کے مطابق پچھلے چار ماہ کے دوران پاکستانی شہریوں کی بڑی تعداد ایران آتی جاتی رہی ہے۔ حکام کو یہ معلوم ہوا ہے کہ ایران جانے والے افراد اپنے ساتھ کرنسی کی بھاری مقدار بھی لے جاتے رہےہیں۔

رپورٹس کے مطابق "ایف آئی اے" کے حکام ایران کی سرحد پر قائم گذرگاہ کے عہدیداروں سے تحقیقات کررہے ہیں۔ تحقیقات کے دوران پتا چلا ہے کہ 100 افراد بار بار ایران آتے جاتے پائے گئے ہیں۔ کرنسی کی اسمگلنگ میں ملوث یہ عناصر تفتان بارڈر عبور کرکے ایران داخل ہوتے اور اسی گذرگاہ سے واپس آتے رہے ہیں۔
پاکستان کے راستے ایران کوغیرملکی کرنسی کی اسمگلنگ کا انکشاف ایک ایسے وقت میں ہوا ہے جب دوسری جانب امریکا نے ایران پر اقتصادی پابندیاں عاید کرنے کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے۔