.

امریکا میں مقیم ایرانی رہ نما کی اہلیہ اور دو بیٹیاں ایران واپسی پر گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے ذرائع ابلاغ کے مطابق پولیس نے امریکا میں مقیم ایک سرکردہ شخصیت کی اہلیہ اور دو بیٹیوں کو حراست میں لیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امریکا میں رہنے والے محمد ھدایتی کی اہلیہ اور بیٹیوں کو امریکا سے واپسی پر اصفہان کے ہوائی اڈے سے گرفتار کیا۔

"دید کاہ نور" ویب سائیٹ کی رپورٹ کے مطابق امریکا میں رہنے والے ھدایتی کی اہلیہ زھرا مجد اور اس کی دو کم عمر بیٹیوں تین سالہ ھانیہ اور پانچ سالہ زیب کو مذہبی عدالت کے حکم پر حراست میں لیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق تینوں ماں بیٹیوں کو اصفہان کے "دستکرد" جیل منتقل کردیا گیا ہے، جہاں سے انہیں تہران کی بدنام زمانہ جیل "ایفین"منتقل کیا جائے گا۔

رپورٹ کے مطابق "دیدکا نور" ویب سائیٹ کا کہنا ہےکہ تین سالہ ھانیہ ذیابیطس کی مریضہ ہے اور اسے باقاعدگی کے ساتھ انسولین کی ضرورت ہوتی ہے۔ حراست میں لیے جانے کے بعد بچی کو ضروری طبی امداد مہیا نہیں کی گئی۔

خیال رہے کہ محمد ھدایتی ایک مذہی رہ نما ہیں جو امریکا میں قدامت پسند مذہبی لیڈروں کے ایک فورم کے سیکرٹری جنرل رہ چکے ہیں۔ وہ ایران کے موجودہ ولایت فقیہ کے نظام کے سخت خلاف ہیں۔

ایرانی آمریت کے کئی اور شواہد بھی موجود ہیں۔ ایرانی رجیم کے خلاف کلمہ حق بلند کرنے والوں کو حراست میں لیا جاتا اور انہیں قید وبند کے ساتھ جان سے مارنے سے بھی گریز نہیں کیا جاتا۔ سات ماہ پیشتر ایرانی پولیس نے صادق شیرازی کے صاحب زادے حسین شیرازی کو اس لیے حراست میں لے لیا تھا کہ اس نے خامنہ ای کو ڈکٹیٹر اور ولایت فقیہ کے نظام کو "غلامی" کی بدترین شکل قرار دیا تھا۔