.

سعودی ولی عہد سے امریکا کے خصوصی ایلچی برائے افغانستان زلمے خلیل زاد کی ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے ولی عہد اور وزیر دفاع شہزادہ محمد بن سلمان سے الریاض میں امریکا کے خصوصی ایلچی برائے افغانستان زلمے خلیل زاد نے ملاقات کی ہے اور ان سے افغانستان میں جاری جنگ کے خاتمے کے حوالے سے کوششوں کے بارے میں تبادلہ خیال کیا ہے۔

ملاقات میں سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر ، سعودی انٹیلی جنس کے نائب سربراہ احمد العسیری ، الریاض میں سعودی سفارت خانے کے ناظم الامور کرسٹوفر ہینزل اور دوسرے اعلیٰ حکام بھی موجود تھے۔

زلمے خلیل زاد نے گذشتہ سوموار کو افغان دارالحکومت کابل کا دورہ کیا تھا اور افغان لیڈروں سے ملک میں گذشتہ سترہ سال سے جاری جنگ کے خاتمے کے لیے مذاکرات کا پہلا دور کیا تھا۔افغانستان کے لیے امریکا کا خصوصی ایلچی مقرر ہونے کے بعد ان کا کابل کا یہ پہلا دورہ تھا۔

ٹرمپ انتظامیہ نے 67 سالہ افغان نژاد امریکی شہری زلمے خلیل زاد کو گذشتہ ماہ افغانستان میں امن کوششوں کو آگے بڑھانے کے لیے اپنا خصوصی ایلچی مقرر کیا تھا۔وہ اس سے قبل افغانستان اور عراق میں امریکا کے سفیر رہ چکے ہیں۔اب وہ طالبان کے ساتھ امن مذاکرات کرنے والی امریکی ٹیم کی قیادت کررہے ہیں اور انھوں نے جمعہ کو قطر میں طالبان کے ایک وفد سے بات چیت کی ہے۔طالبان نے ہفتے کے روز ایک بیان میں امریکا سے پہلی مرتبہ براہ راست مذاکرات کی تصدیق کی ہے۔

دریں اثناء سعودی ولی عہد سے الریاض میں صومالی وزیراعظم حسن علی خیر نے بھی ملاقات کی ہے ۔انھوں نے دونوں ملکوں کے درمیان دوطرفہ تعلقات کا جائزہ لیا ہے اور مختلف شعبوں میں انھیں فروغ دینے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا ہے۔