.

بحرین: تیل پائپ لائن کو دھماکے سے اڑانے کے جُرم میں سات افراد کو جیل کی سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بحرین میں ایک عدالت نے سات افراد کو گذشتہ سال تیل کی ایک پائپ لائن کو دھماکے سے اڑانے کے جرم میں قصور وار قرار دے کر پانچ سال سے عمر قید تک جیل اور چھے کو قومیت سے محروم کرنے کی سزا کا حکم دیا ہے۔

بحرین خبررساں ایجنسی ( بی این اے) کے مطابق عدالت نے سوموار کو اپنے فیصلے میں پانچ مدعا علیہان کو عمرقید کی سزا کا حکم دیا ہے۔ ایک کو دس سال اور ایک کو پانچ سال قید کی سزا سنائی ہے۔ان میں سے چھے کو قید کی سزا پوری ہونے کے بعد بحرین کی قومیت سے محروم کردیا جائے گا۔

استغاثہ نے ان مجرموں پر بحرین میں تخریبی کارروائیوں کے لیے دہشت گرد گروپ تشکیل دینے ،اس میں شامل افراد کو ہتھیاروں اور دھماکا خیز مواد کے استعمال کی تربیت دینے سمیت مختلف الزامات عاید کیے تھے۔

ان افرادنے نومبر 2017ء میں بحرین کی تیل کی ایک مرکزی پائپ لائن کو دھماکے سے اڑا دیا تھا۔یہ پائپ لائن بحرین کی باپکو ریفائنری کو پڑوس میں واقع سعودی عرب کے صوبے ظہران میں تیل کی بڑی کمپنی آرامکو کے مرکزی پمپنگ اسٹیشن سے ملاتی ہے۔

بحرین کی حکومت نے فروری میں ایران پر تیل کی اس پائپ لائن کو بم دھماکے سے اڑانے کے واقعے میں ملوث ملزموں میں سے دو کو عسکری تربیت دینے اور اسلحہ مہیا کرنے کا الزام عاید کیا تھا۔