یو اے ای: برطانوی اسکالر میتھیو ہیجز کے خلاف غیرملک کے لیے جاسوسی پر فردِ الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

متحدہ عرب امارات میں برطانیہ سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹریٹ آف فلاسفی ( پی ایچ ڈی) کے ایک اسکالر پر غیر ملک کے لیے جاسوسی پر فردِ الزام عاید کردی گئی ہے۔

یو اے ای کے اٹارنی جنرل حماد الشمسی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ میتھیو ہیجز پر ایک غیر ملک کے لیے جاسوسی ، ملکی فوج ، سیاست اور ریاست کی اقتصادی سکیورٹی کو نقصان پہنچانے کا الزام ہے۔

31 سالہ میتھیو کو 5 مئی کو دبئی کے ہوائی اڈے پر گرفتار کیا گیا تھا۔وہ 2011ء میں عرب بہاریہ انقلابوں کے بعد یو اے ای کی خارجہ اور داخلی سکیورٹی کی پالیسیوں پر تحقیق کررہے تھے۔

ان کی بیوی ڈینیلہ تجادا نے کہا ہے کہ ان کے خاوند کو یو اے ای میں کسی نامعلوم مقام پر قید تنہائی میں رکھا گیا ہے۔ان تک قونصل خانے اور خاندان کی محدود رسائی ہے۔ ہیجز کو گذشتہ ہفتے یہ بتایا گیا تھا کہ ان پر معلومات اکٹھی کرنے اور ان کا ایک غیرملکی ایجنسی ۔۔۔برطانوی حکومت ۔۔کے ساتھ تبادلہ کرنے پر فرد ِالزام عاید کی جارہی ہے‘‘۔

تجادا نے برطانوی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ صورت حال کی وضاحت کرے کہ میتھیو بے گناہ ہے اور اس کے خلاف عاید کردہ الزامات درست نہیں ہیں ۔ خود میتھیو نے بھی خود پر جاسوسی کےا لزامات کی تردید کی ہے۔

برطانوی دفتر خارجہ نے ہیجز اور اس کے خاندان کی حمایت کا اظہار کیا ہے اور اس کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ وہ یو اے ای کے حکام کے ساتھ قریبی رابطے میں ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں