.

خاشقجی کیس کی فوری اور منصفانہ تحقیقات چاہتے ہیں: وائٹ ہائوس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

وائٹ ہائوس نے ترکی کے شہر استنبول میں سعودی قونصل خانے میں لاپتا ہونے والے صحافی جمال خاشقجی کے کیس کے حوالے سے جاری تفتیش کے بارے میں کہا ہے کہ امریکا خاشقجی کیس کی فوری اور منصفانہ تحقیقات چاہتا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی عرب کی جانب سے خاشقجی کیس کی ابتدائی رپورٹ جاری کیے جانے کے بعد وائٹ ہائوس کی طرف سے بھی رد عمل سامنے آیا ہے جس میں سعودی عرب کی تحقیقات کو مثبت قراردیا گیا ہے۔

وائٹ ہائوس کی طرف سے جاری کیے گئے بیان میں‌ کہا گیا ہے کہ امریکا خاشقجی کے کیس کی شفاف، منصفانہ اور فوری تحقیقات چاہتا ہے اور اس حوالے سے ترکی اور سعودی عرب کے ساتھ ہر ممکن تعاون کے لیے تیار ہے۔

امریکا نے صحافی جمال خاشقجی کے سعودی قونصل خانے میں مارے جانے پر گہرے دکھ کا بھی اظہار کیا اور مقتول کے اہل خانہ اور دوستوں سے تعزیت کی ہے۔

خیال رہے کہ سعودی عرب کے پراسیکیوٹر جنرل نے اعلان کیا ہے کہ جمال خاشقجی کو سعودی عرب کے قونصل خانے میں داخل ہونے کے بعد لڑائی جھگڑے کے دوران ماردیا گیا ہے۔ سعودی عرب جمال خاشقجی کی موت کے ذمہ دار 18 افراد سے تفیش کر رہا ہے۔ یہ تمام افراد سعودی شہری ہیں اور انہیں حراست میں لیا گیا ہے۔