صنعاء: حوثی ملیشیا نے سیمی نار میں شریک 20 صحافیوں، لکھاریوں کو گرفتار کر لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں حوثی شیعہ باغیوں نے جمعرات کے روز ملک کے پریس سنڈیکیٹ کے سابق سربراہ عبدالباری طاہر سمیت متعدد صحافیوں ، لکھاریوں اور کارکنان کو حراست میں لے لیا ہے۔

ان زیر حراست افراد کے قریبی میڈیا ذرائع نے بتایا ہے کہ حوثی جنگجوؤں نے دارالحکومت صنعاء میں ایک ہوٹل میں منعقدہ ایک سیمی نار پر دھاوا بول دیا تھا۔ اس سیمی نار میں منافرت پر مبنی تقریر اور تشدد کی انگیخت کی روک تھام کے موضوع پر گفتگو کی جارہی تھی۔

ایران نواز حوثی ملیشیا نے سیمی نار میں شریک تمام بیس شخصیات کو گرفتار کر لیا ہے اور انھیں کسی نا معلوم مقام پر منتقل کردیا ہے۔فوری طور پر ان کا اتا پتا معلوم نہیں ہوسکا ۔

گرفتار افراد میں شامل یمنی پریس سنڈیکیٹ کے سابق سربراہ عبدالباری طاہر ایک آزاد سیاسی تجزیہ کار ہیں اور انھیں یمنی لکھاریوں اور تبصرہ نگاروں میں بڑی قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔

واضح رہے کہ حوثی جنگجو اپنے زیر قبضہ یمن کے علاقوں میں اپنے مخالف آواز اٹھانے والے افراد کو آئے دن گرفتار کرتے رہتے ہیں اور انھوں نے عام لوگوں کی بھی بلا امتیاز پکڑ دھکڑ کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔ان افراد کو حوثی ملیشیا کے زیر انتظام حراستی مراکز اور عقوبت خانوں میں تشدد اور اذیتوں کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں