سلامتی کونسل میں آج شام کی آئین ساز کمیٹی کا معاملہ زیر بحث آئے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عالمی سلامتی کونسل امریکا کی درخواست پر آج شامی بحران کو زیر بحث لانے کے لیے اجلاس کا انعقاد کر رہی ہے۔ یہ پیش رفت شامی حکومت کی جانب سے اقوام متحدہ کی سرپرستی میں نئے آئین کو تیار کرنے والی کمیٹی کی تشکیل مسترد کر دینے کے بعد سامنے آئی ہے۔

سفارتی ذرائع کے مطابق شام کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی اسٹیفن ڈی میستورا آئین ساز کمیٹی کے حوالے سے بشار حکومت کی منظوری حاصل کرنے میں ناکام رہے۔ اس کمیٹی کی تشکیل کا فیصلہ رواں سال جنوری میں روس میں منعقد سوچی کانفرنس کے دوران ہوا تھا۔

یاد رہے کہ آج ہونے والے سلامتی کونسل کے اجلاس میں ڈی میستورا ذاتی طور پر شریک نہیں ہو سکیں گے تاہم وہ وڈیو کے ذریعے کانفرنس کا حصّہ بنیں گے۔ ڈی میستورا یہ اعلان کر چکے ہیں کہ نومبر کے اواخر میں خصوصی ایلچی کے منصب سے کوچ کرنے سے قبل وہ بقیہ عرصے کے دوران شام کی آئین ساز کمیٹی کی تشکیل میں درپیش رکاوٹوں کو دور کرنے پر کام کرنا چاہتے ہیں۔

ڈی میستورا نے سلامتی کونسل کو آگاہ کیا تھا کہ بشار حکومت مذکورہ کمیٹی کی رکنیت کے لیے چُنے گئے افراد پر آمادہ نہیں ہوئی۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ ضرورت اس بات کی ہے کہ کوئی بھی فریق اس کمیٹی پر غالب نہ آئے۔

اگرچہ مغربی ممالک آئین ساز کمیٹی کی تشکیل میں تیزی لانے کا مطالبہ کر رہے ہیں تا کہ سیاسی عمل کو دوبارہ سے شروع کیا جا سکے تاہم شامی حکومت اور اپوزیشن کے درمیان اختلاف نمایاں طور پر نظر آ رہا ہے۔ شامی حکومت کے نزدیک آئین کو زیر بحث لانا اور اس متعلقہ تمام امور ،،، یہ سیادت کا معاملہ ہے جس میں کسی بیرونی مداخلت کی اجازت نہیں۔ دوسری جانب شامی اپوزیشن ایک نئے آئین کا مطالبہ کر رہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں