سعودی عرب کو اسلحہ کی فروخت روکنے کا مطالبہ محض "جذباتی" ہے: ماکروں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

فرانس کے صدر عمانویل ماکروں نے صحافی جمال خاشقجی کے قتل کو جواز بنا کر سعودی عرب کو اسلحہ فروخت کرنے پر پابندی کا مطالبہ مسترد کر دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ جمال خاشقجی کی وجہ سے سعودیہ کو اسلحہ کی فروخت روکنے کا مطالبہ محض "جذباتی" ہے۔

ایک پریس کانفرنس سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ سعودی عرب کو اسلحہ کی فروخت کا جمال خاشقجی کیس کے ساتھ کوئی تعلق نہیں۔ ہمیں ایک معاملے کو دوسرے کے ساتھ جوڑنا نہیں چاہیے۔

خیال رہے کہ سنہ 2008ء سے 2017ء کے دوران سعودی عرب بھارت کے بعد فرانس سے اسلحہ کا سب سے بڑا خریدار رہا ہے۔ اس دوران سعودی عرب نے فرانس سے 13 ارب 80 کروڑ ڈالر کا اسلحہ اور جنگی ساز وسامان خرید کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں