.

ٹرمپ کے عزم کو توڑنے کے لیے پہلی بار چین اور جاپان متّحد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

چین اور جاپان نے دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کو مضبوط بنانے کا عزم کرتے ہوئے معاہدوں کے ایک وسیع مجموعے پر دستخط کیے ہیں۔ ان میں کرنسی کے تبادلے سے متعلق سمجھوتا بھی شامل ہے۔ یہ پیش رفت جاپانی وزیراعظم کے چین کے تین روزہ دورے کے دوران ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب کہ بیجنگ اور واشنگٹن کے بیچ تجارتی کشیدگی اپنے عروج پر ہے۔

دورے میں چینی اور جاپانی کمپنیوں کے درمیان مجموعی طور پر 18 ارب ڈالر کے معاہدوں پر دستخط ہوئے۔ ان کا مقصد دونوں ملکوں کے درمیان طویل المیعاد تعاون کو مضبوط بنانا ہے۔

جاپانی وزیراعظم اور چین کی ریاستی کونسل کے سربراہ اس امر پر متفق ہو گئے ہیں کہ دونوں ممالک امن کو یقینی بنانے کے واسطے جزیرہ نما کوریا کو جوہری ہتھیاروں سے پاک کرنے پر مل کر کام کریں گے۔

واضح رہے کہ امریکی معیشت کی نمو میں سست روی مالیاتی سال کی تیسری سہ ماہی میں متوقع اوسط سے کم رہی۔ مقامی سطح پر طلب میں اضافے اور حکومتی اخراجات نے تجارتی تنازعات کے نتیجے میں امریکی برآمدات کی کمی کے اثرات کو کرنے میں مدد دی۔

تیسری سہ ماہی میں معیشت کی شرح نمو 3.5% رہی جو دوسری سہ ماہی کے دوران کی 4.2% سے کم ہے۔ تاہم یہ تجزیہ کاروں کی توقع سے زیادہ رہی جو تیسری سہ ماہی میں شرح نمو کی توقع 3.3%. تک کر رہے تھے۔