.

یمن : حوثیوں کے دو دھڑوں کے درمیان باہمی لڑائی میں شدت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے شمالی صوبوں صعدہ ، حجہ ، عمران اور دارالحکومت صنعاء کے مختلف علاقوں میں حوثی تحریک کے سربراہ عبدالملک الحوثی اور ان کے چچا عبدالعظیم الحوثی کے حامیوں کے درمیان جھڑپیں شدت اختیار کر گئی ہیں۔

دونوں کے پیروکار باہم مسلح تصادم کے علاوہ ایک دوسرے کے حامیوں کو اغوا بھی کررہے ہیں ۔صعدہ سے تعلق رکھنے والے قبائلی ذرائع نے بتایا ہے کہ عبدالملک الحوثی کی وفادار ملیشیا نے اسپتالوں سے عبدالعظیم کے وفادار دسیوں زخمی افراد کو اغوا کر لیا ہے۔ انھیں اب زیر حراست رکھا ہوا ہے اور رہا کرنے سے انکار کردیا ہے۔

ذرائع نے اس بات کی بھی تصدیق کی ہے کہ عبدالعظیم الحوثی کے پیروکار عبدالملک الحوثی کی وفادار ملیشیا پر انتہاپسندی کی راہ پر چلنے اور ایران کا آلہ کار بننے کے الزامات عاید کررہے ہیں۔ان کا کہنا ہے کہ وہ یمن میں زیدی عقیدے کی قیمت پر ایرانی لیڈر آیت اللہ خمینی کے افکار وتعلیمات کی تشہیر کررہے ہیں۔

عبدالعظیم زیدی شیعہ فرقے کے معتبرعالم مانے جاتے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ حوثی ملیشیا کے اقدامات کا زیدی عقیدے سے کوئی تعلق نہیں ہے بلکہ وہ حوثی جنگجوؤں کو چور اور ڈاکو قرار دیتے ہیں۔ وہ یمن میں ایران کی مداخلت کو مسترد کرتے ہیں ۔وہ ایران کے زیدی عقیدے کے پیروکاروں پر دباؤ کے بھی شدید مخالف ہیں اور ان کا خیال ہے کہ اس طرح یمن میں ایران کے مفادات کا تحفظ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔