.

ہنڈائی انجینئرنگ اینڈ کسنٹرکشن کی ایران کے ساتھ 52 کروڑ ڈالر کی ڈیل منسوخ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جنوبی کوریا کی معروف کمپنی "ہنڈائی انجینئرنگ اینڈ کنسٹرکشن" نے آج پیر کے روز ایک اعلان میں بتایا ہے کہ اُس نے ایران میں پیٹروکیمکل کمپلیکس کی تعمیر کا سمجھوتا منسوخ کر دیا ہے ، سمجھوتے کی مالیت 595 ارب کوریائی وَن (52.1 کروڑ ڈالر) تھی۔ کمپنی کے مطابق تہران پر امریکی پابندیوں کے نتیجے میں اس منصوبے کے لیے ایران کی فنڈنگ کی قدرت کو ضرر پہنچا ہے۔

ہنڈائی کمپنی کے مطابق منصوبے کی تعمیر سے متعلقہ کنسورشیم نے سمجھوتے کو اتوار کے روز منسوخ کیا۔

ہنڈائی انجینئرنگ اینڈ کسنٹرکشن کمپنی نے اپنی انضباطی اطلاع میں بتایا ہے کہ "سمجھوتے کو منسوخ کرنے کی وجہ اس کے لیے مطلوبہ فنڈنگ کا مکمل نہ ہونا ہے جو کہ سمجھوتے کے نافذ العمل ہونے کے واسطے پیشگی شرط تھی۔ ایران پر اقتصادی پابندیوں جیسے بیرونی عوامل نے نقصان پہنچایا ہے"۔

یاد رہے کہ چار نومبر سے تہران پر امریکی اقتصادی پابندیوں کا دوسرا مرحلہ لاگو ہو جائے گا جس میں ایران کی تیل کی برآمدات پر بھی پابندی ہو گی۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ تہران کو ایک نئے معاہدے پر مجبور کرنے کے لیے کوشاں ہیں جس کے ذریعے ایران کے جوہری اور میزائل پروگرام پر مزید قدغن لگائی جا سکے۔