.

اسرائیل میں اپنے سفارت خانے کو عنقریب بیت المقدس منتقل کر دیں گے : نومنتخب برازیلی صدر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برازیل کے صدر ژیئر بولسونارو نے اعلان کیا ہے کہ ان کام ملک اسرائیل میں اپنے سفارت خانے کو جلد ہی بیت المقدس منتقل کر دے گا۔

یہ اعلان بولسونارو کی انتخابات میں کامیابی کے کچھ ہی عرصے بعد سامنے آیا ہے۔

جمعرات کی شام اپنی ٹوئیٹ میں 63 سالہ بولسونارو نے کہا کہ "جیسا کہ ہم نے انتخابی مہم کے دوران اعلان کیا تھا ،،، اب ہم برازیل کے سفارت خانے کو تل ابیب سے بیت المقدس منتقل کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں"۔ انہوں نے مزید کہا کہ "اسرائیل خود مختاری اور سیادت کی حامل ریاست ہے اور ہم پر لازم ہے کہ اس امر کا پورا احترام کریں"۔

اس اعلان پر عمل درامد کی صورت میں امریکا اور گوئٹے مالا کے بعد برازیل وہ تیسرا ملک ہو گا جو اپنا سفارت خانہ بیت المقدس منتقل کرے گا۔

ژیئر بولسونارو نے اتوار کے روز برازیل میں صدارتی انتخابات کے دوسرے مرحلے میں کامیابی حاصل کر لی تھی۔ واضح رہے کہ انتخابی مہم کے دوران اُن کے بیانات کو نسل پرستی پر مبنی قرار دیا گیا تھا۔

اسرائیلی وزیراعظم کے دفتر کے ایک ذمّے دار نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ غالبا بنیامین نیتن یاہو آئندہ سال جنوری میں برازیل کے نئے صدر کے عہدہ سنبھالنے کی تقریب میں شرکت کریں گے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مختلف جانبوں سے سامنے آنے والے انتباہات کو نظر انداز کرتے ہوئے 6 دسمبر 2017ء کو بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کر لیا تھا۔