.

بھارت : امرتسر میں گوردوارے پر دستی بم سے حملہ ، 3 افراد ہلاک ، 15 زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بھارت کی ریاست مشرقی پنجاب کے ضلع امرتسر میں اتوار کے روز سکھ مذہب کے ایک گوردوارے نرنکاری بھون پر دستی بم سے حملے میں تین افراد ہلاک اور پندرہ زخمی ہوگئے ہیں۔

ضلع کے ایک پولیس افسر دنیش سنگھ نے بتایا ہے کہ پندرہ زخمیوں کو امرتسر کے اسپتال گورو نانک دیو اور آئیوی اسپتال میں منتقل کردیا گیا ہے۔

ہندوستان ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق امرتسر میں واقع گاؤ ں عادلی وال میں ایک گوردوارے میں ایک اجتماع منعقد ہورہا تھا۔اس دوران میں ایک موٹر سائیکل پر سوار دو نامعلوم افراد نے اس پر دستی بم سے حملہ کردیا۔عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ حملہ آوروں کے پاس آتشیں رائفلیں بھی تھیں۔

دنیش سنگھ نے بتایا ہے کہ نقاب پوش مسلح حملہ آوروں نے عبادت کے لیے مختص ایک ہال میں دستی بم پھینکا تھا۔یہ مرکزی اجتماع گاہ سے کچھ فاصلے پر پھٹا تھا۔اس وقت وہاں سیکڑوں افراد عبادت کے لیے موجود تھے۔ حکام نے فوری طور پر کسی گروپ پر اس حملے کا الزام عاید نہیں کیا ہے۔

واضح رہے کہ بھارتی پنجاب گذشتہ دو عشروں سے زیادہ عرصے سے مجموعی طور پر پُرامن ہی رہا ہے۔بھارتی سکیورٹی فورسز نے 1980ء کی دہائی اور 1990ء کے اوائل میں سکھ مذہب کے پیروکاروں کی الگ وطن خالصتان کے قیام کے لیے مسلح تحریک کو بزور طاقت کچل دیا تھا۔اس کے بعد سے کبھی کبھار ہی تشدد کا اس طرح کا کوئی واقعہ رونما ہوتا ہے۔