.

اسرائیل مشرقِ اوسط میں مغرب کا قائم کردہ ’’ سرطانی پھوڑا‘‘ ہے: ایرانی صدر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی صدر حسن روحانی نے اسرائیل کو ایک ’’سرطانی پھوڑا ‘‘ ( کینسری ٹیومر) قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ مغربی ملکوں نے اس کو مشرقِ اوسط میں اپنے مفادات کو آگے بڑھانے کے لیے قائم کیا تھا۔

انھوں نے ہفتے کے روز سالانہ اسلامی اتحاد کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ’’ دوسری عالمی جنگ کا ایک خطرناک نتیجہ خطے میں ایک سرطانی پھوڑے کا قیام تھا‘‘۔ انھوں نے اسرائیل کو مغرب کا قائم کردہ ایک ’’ جعلی رجیم ‘‘ قرار دیا ہے۔

ایرانی لیڈر بالعموم اسرائیل کی مذمت اور اس کی تباہی وبربادی کی پیشین گوئی کرتے رہتے ہیں لیکن اعتدال پسند صدر حسن روحانی کم ہی اس طرح کے تندوتیز بیانات داغتے ہیں۔

ایران حزب اللہ اور حماس ایسی جنگجو تنظیموں کی حمایت کرتا ہے جو اسرائیل کی خطے میں جارحیت اور فلسطینی سرزمین پر قبضے کے خلاف مزاحمتی کردار ادا کررہی ہیں اور اسرائیل کو نیست و نابود کرنا چاہتی ہیں۔