بحرین میں انتخابی نتائج کے اعلان کے بعد کابینہ مستعفی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بحرین کی کابینہ نے گذشتہ اتوار کو ملک میں منعقدہ پارلیمانی انتخابات کے بعد آئین کے مطابق شاہ حمد بن عیسیٰ آل خلیفہ کو اجتماعی طور پر استعفا پیش کردیا ہے۔

کابینہ نے پانچویں قانون ساز اسمبلی کے انتخابات کے نتائج کے اعلان کے بعد اپنا استعفا دیا ہے اور اب اس کی جگہ چار سال کی مدت کے لیے نئی کابینہ تشکیل دی جائے گی۔

بحرین کے وزیر انصاف شیخ خالد بن علی آل خلیفہ نے کہا ہے کہ گذشتہ ماہ منعقدہ پارلیمانی انتخابات میں ووٹ ڈالنے کی شرح 67 فی صد رہی ہے اور یہ 2014ء میں منعقدہ عام انتخابات سے 14 فی صد زیادہ ہے۔تب ووٹ ڈالنے کی شرح 53 فی صد رہی تھی۔

انھوں نے کہا کہ ’’ بحرین اب جمہوری ترقی کے ایک نئے دور میں داخل ہوچکا ہے اور اس کا انتخابی عمل تجربے کے مرحلے سے بہت آگے جا چکا ہے‘‘۔

بحرین میں 24 نومبر کو منعقدہ پارلیمانی انتخابات میں آزاد اور خواتین امیدواروں کی بڑی تعداد نے کامیابی حاصل کی ہے اور اس ننھی خلیجی ریاست کی تاریخ میں پہلی مرتبہ چھے خواتین امیدوار براہ راست پارلیمان کی ارکان منتخب ہوئی ہیں۔انتخابات میں پہلی مرتبہ بہت سے نوجوان اور نئے چہرے منتخب ہوئے ہیں اور میڈیا سے وابستہ شخصیات نے بھی کامیابی حاصل کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں