.

امریکی فوجی کو ذبح کا ذمہ دار "داعشی" شام میں فضائی حملے میں ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی ٹیلی ویژن نیٹ ورک"فاکس نیوز" کی رپورٹ کے مطابق شام میں "داعش" کا ایک اہم سرغنہ امریکی فضائی حملے میں ہلاک ہوگیا۔ مقتول "داعشی" چار سال قبل شام میں ایک امریکی فوجی کو ذبح کرکے ہلاک کرنے کا الزام عاید کیا جاتا ہے۔

فاکس نیوز کے مطابق داعشی کمانڈر"ابوالعمرین" کو اتوار کی شام بغیر پائلٹ ڈرون طیارے کی مدد سے نشانہ بنایا گیا۔

مقتول داعشی دہشت گرد امریکی فوجی "پیٹر کاسیگ" کو نومبر 2014ء کو ذبح کرکے ہلاک کرنے کے الزام میں اشتہاری قرار دیا تھا۔ ابو العمرین داعش میں قیدیوں کو

"فاکس نیوز" نے عالمی اتحادی فوج کے ترجمان کرنل شین رایان کے حوالے سے بتایا ہے کہ ڈرون حملے میں "ابو العمرین" سمیت کئی دوسرے جنگجو بھی ہلاک ہوئے ہیں۔

امریکی حکام کا کہنا ہے کہ ابوالعمرین کا شمار یرغمال بنائے گئے افراد کوذبح کرنا تھا۔ 17 نومبر2014ء کو داعش نے ایک فوٹیج جاری کی تھی جس میں ایک سیاہ نقاب پوش شخص کو ایک کٹے سر کی طرف اشارہ کرتے اور یہ کہتے بتایا گیا تھا کہ یہ سر امریکی پیٹر اڈورڈ کاسیگ کا ہے جو امریکی فوج میں شامل تھا۔ بعد میں امریکی انٹیلی جنس حکام نے نقاب پوش داعشی کی شناخت"ابو العمرین" کےنام سے کی تھی۔