ترکی میں ایرانی تیل کی خریداری صفر ہوگئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ترکی کی جانب سے ایران سے تیل کی خریداری بالکل ختم ہوکر رہ گئی ہے۔ ایران سے تیل خرید کرنے والی ترک آئل کمپنی "توبراش" نے اکتوبر میں ایران سے 1 لاکھ 29 ہزار بیرل تیل خرید کیا تھا مگر نومبر میں یہ مقدار صفر پرآگئی ہے۔

خیال رہے کہ ترکی ان آٹھ ممالک میں شامل ہے جنہیں امریکا نے تہران پر پابندیوں کے دوران ایران سے محدود پیمانے پر تجارتی تعلقات اور تیل کی خریداری کی اجازت دی تھی۔ امریکا نے پانچ نومبرکو ایران پر مزید اقتصادی پابندیاں عاید کی تھیں جن میں ایرانی تیل اور توانائی کے شعبوں کو خاص طور پر ہدف بنایا گیا تھا۔

ایرانی وزیر برائے پٹرولیم بیجن زنگنہ نے سوموار کو ایک بیان میں کہا کہ دشمن کے ساتھ ہماری جنگ میں تیل کا شعبہ سب سے آگے ہوگا۔ ان کا کہنا تھا کہ امریکا کی طرف سے عاید کی جانے والی پابندیوں کے اثرات کم کرنے پوری کوشش کرے گا۔ان کا کہنا تھا کہ امریکا ایران پر پابندیوں کے ذریعے تہران کو بلیک میل کرنا چاہتا ہے مگر ایران امریکی پابندیوں کا شکار نہیں ہوگا اور نہ ہی کسی دبائو میں آئے گا۔

ایرانی وزیر نے "دشمن" کے الفاظ کے ساتھ اس دشمن کا نام نہیں لیا مگر ایرانی وزارت پٹرولیم کی ویب سائیٹ"شانا" کے مطابق ایران امریکا کے ساتھ حالت جنگ میں ہے اور امریکا ہی ایران کی تیل کی برآمدات کو ہدف بنا کر ایران کو کم زور کرنا چاہتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں