روس کو یورپ کی سمت اپنے میزائلوں کو ہٹانا ہو گا: نیٹو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شمالی اوقیانوس کے اتحاد نیٹو نے روس پر زور دیا ہے کہ اسے درمیانے فاصلے تک مار کرنے والے اُن نئے میزائلوں کو ہٹا لینا چاہیے جو اس نے یورپ کی سمت تعینات کیے ہیں۔

برسلز میں نیٹو کے رکن ممالک کے وزراء خارجہ کے اجلاس سے قبل نیٹو کے سکریٹری جنرل ژان اسٹولٹنبرگ نے مزید کہا کہ "روس کے نئے میزائلوں کا نظر میں آنا دشوار ہے اور یہ نیوکلیئر وار ہیڈز لے جانے کی صلاحیت رکھتے ہیں"۔

نیٹو کے سکریٹری جنرل نے باور کرایا ہے کہ شمالی افریقا سے لے کر مشرق وسطی تک نیٹو کو متعدد خطرات درپیش ہیں۔

اسٹولٹنبرگ کے مطابق "نیٹو پر لازم ہے کہ وہ ان خطرات کے لیے خود کو تیار کرے جن کے بارے میں آج پیش گوئی کرنا مشکل ہے۔ ہم نے حالیہ برسوں میں داعش تنظیم کو دیکھا جس نے عراق اور شام کی سرزمین کے ایک بڑے حصے پر قبضہ کر لیا۔ نیٹو نے اپنے اتحادیوں کے ساتھ مل کر اس دہشت گرد تنظیم کو ہزیمت سے دوچار کرنے کے لیے کام کیا۔ علاوہ ازیں تخریب کار جماعتوں اور جرائم پیشہ ٹولیوں کی شکل میں دیگر خطرات بھی نیٹو کے سر پر منڈلا رہے ہیں۔ ہم بحیرہ روم میں ان خطرات کا سامنا یورپی یونین کے ساتھ مل کر کر رہے ہیں۔ یہاں ہم تیونس اور اردن جیسے شراکت داروں کے ساتھ بھی تعاون کر رہے ہیں"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں