افغان وزارت داخلہ میں پہلی مرتبہ خاتون کا اعلیٰ عہدے پر تقرر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

افغانستان کی وزارت داخلہ میں پہلی مرتبہ ایک خاتون کا اعلیٰ عہدے پر تقرر کیا گیا ہے۔افغان حکومت نے حسنہ جلیل کو پالیسی اور تزویراتی امور کی نائب (ڈپٹی) مقرر کیا ہے۔انھوں نے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ وہ اپنے عہدے کے چیلنجز سے عہدہ برآ ہونے کے لیے تیار ہیں۔

حسنہ جلیل کا کہنا ہے کہ ان کے تقرر سے سخت گیر مذہبی تحریک کو ایک پیغام جائے گا کہ یہ حکومتِ افغانستان کی ایک کامیاب کہانی ہے ۔ اس کے سکیورٹی کے شعبے میں ایک خاتون خدمات انجام دے رہی ہے اور میرے خیال میں یہ بہ ذات خود ایک پیغام ہے ۔

افغان خواتین سنہ 2001ء میں طالبان کی حکومت کے خاتمے کے بعد سے مختلف شعبوں میں آگے آئی ہیں۔طالبان نے اپنے دورِ حکومت میں لڑکیوں کے اسکول جانے پر پابندی عاید کردی تھی اور خواتین کے کام پر جانے کے حق کی مخالفت کی تھی۔

لیکن ان کی حکومت کے خاتمے کے بعد افغانستان کے مرتب کردہ نئے آئین میں خواتین کو حقوق تفویض کیے گئے ہیں اور وہ اب پارلیمان کی رکن منتخب ہوسکتی ہیں اور مختلف سرکاری شعبوں میں کام کرسکتی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں