.

سعودی عرب خلیج تعاون کونسل کی وحدت کو برقرار رکھنا چاہتا ہے: شاہ سلمان بن عبدالعزیز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے کہا ہے کہ سعودی عرب خلیج تعاون کونسل ( جی سی سی) کی وحدت کو برقرار رکھنا چاہتا ہے۔

وہ اتوار کو دارالحکومت الریاض میں جی سی سی کے انتالیسویں سالانہ سربراہ اجلاس کے افتتاح کے موقع پر خطاب کررہے تھے۔انھوں نے کہا کہ ایرانی رجیم نے دہشت گردی پر عمل جاری رکھا ہوا ہے اور اس نے خطے کے استحکام کو خطرے سے دوچار کردیا ہے۔

انھوں نے اپنی تقریر میں ایک مرتبہ پھر اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ فلسطینی کاز کو ہماری تشویش کے موجب مسائل میں اولیت حاصل ہے۔

ان کے بعد امیرِ کویت شیخ صباح الاحمد الجابر الصباح نے افتتاحی اجلاس سے خطاب کیا۔انھوں نے کہا کہ کونسل کے رکن ممالک اس کے کردار کو برقرار رکھنے میں گہری دلچسپی رکھتے ہیں اور انھیں اپنے عوام کی امنگوں کا احساس ہے۔

امیرِ کویت نے خلیجی ممالک کے درمیان اختلافات کے خاتمے کے لیے میڈیا کی تمام مہموں کو بند کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

قبل ازیں سعودی شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے خلیج تعاون کونسل کے سربراہ اجلاس میں شرکت کے لیے آنے والے متحدہ عرب امارات ، کویت ، بحرین اور اومان کے وفود کا خیرمقدم کیا اور ان کے سربراہوں سے ملاقات کی ہے۔

شاہ سلمان سے الریاض میں شاہی محل میں حاکم دبئی الشیخ محمد بن راشد آل مکتوم ، سلطنت آف اومان (عُمان) کے وفد کے سربراہ فہد آل سعید اور بحرین کے شاہ حمد بن عیسیٰ آل خلیفہ نے الگ الگ ملاقات کی ۔

ان کے علاوہ جی سی سی کے سربراہ اجلاس میں شرکت کے لیے آنے والے کویت کے وفد کے سربراہ اور امیرِ کویت الشیخ صباح الاحمد الجابر الصباح نے بھی ملاقات کی ہے۔ شاہ سلمان نے جی سی سی کے رہ نماؤں کا بہ نفس نفیس ہوائی اڈے پر خیر مقدم کیا۔

خلیج تعاون کونسل کے انتالیسواں سالانہ اجلاس میں تنظیم کے رکن ممالک کے درمیان مختلف شعبوں میں تعاون ، یمن میں جاری جنگ، ایران کی علاقائی سرگرمیوں اور سکیورٹی سے متعلق مختلف امور کے بارے میں تبادلہ خیال کیا گیا ہے۔ علاقائی اور عالمی سطح پر ہونے والی تازہ پیش رفت پر غور بھی اجلاس کے ایجنڈے میں شامل تھا۔

جی سی سی کے سیکریٹری جنرل عبداللطیف الزیانی نے شاہ سلمان کی سربراہی میں ہونے والے اس اجلاس کی اہمیت کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ تنظیم کی مشترکہ مارکیٹ ، کسٹمز یونین اور باہمی معاشی تعاون سے رکن ریاستوں کو فائد ہ پہنچے گا اور اسی کے پیش نظر جی سی سی کے لیڈر سربراہ اجلاس میں شرکت کر رہے ہیں۔