سعودی ولی عہد کے ہاتھ سے شاہ سلمان توانائی پارک کے پہلے مرحلے کا سنگِ بنیاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے شاہ سلمان انرجی پارک (سپارک) کے منصوبے کے پہلے مرحلے کا سنگِ بنیاد رکھ دیا ہے۔ یہ منصوبہ مشرقی صوبے میں الدمام شہر اور الاحساء کے درمیان واقع ہے۔

سپارک 50 مربع کلومیٹر پر محیط توانائی کا ایک بڑا منصوبہ ہوگا۔اس کی تکمیل کے بعد سعودی عرب عالمی سطح پر توانائی ، صنعت اور ٹیکنالوجی کے شعبے میں ایک بڑے مرکز کے طور پر ابھرے گا۔اس منصوبے کا پہلا مرحلہ 2021ء میں پایہ تکمیل کو پہنچے گا۔

اس منصوبے میں پہلے ہی ملکی اور غیرملکی کمپنیوں نے سرمایہ کاری میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے ۔ وہ سعودی عرب کے توانائی کے شعبے کے لیے اشیاء تیار کریں گی اور خدمات مہیا کریں گی۔ توقع ہے کہ پہلے مرحلے میں اس منصوبے میں ایک ارب 60 کروڑ ڈالرز کی سرمایہ کاری کی جائے گی۔

سپارک کی تعمیر وترقی میں سعودی آرامکو اہم کردار ادا کررہی ہے۔اس اہم منصوبے کا بڑا مقصد سعودی عرب کی توانائی کی سپلائی چین کو مقامی بنانا ہے۔سعودی عرب کے وزیر توانائی اور آرامکو کے چئیرمین خالد الفالح نے سنگِ بنیاد رکھنے کی تقریب کے موقع پر کہا کہ سپارک ایک خصوصی اکنامک زون ہوگا۔

انھوں نے اس منصوبے کے نمایاں خدوخال بیان کرتے ہوئے کہا کہ’’سپارک مملکت کے ویژن 2030ء کے تحت وضع کیے گئے سب سے اہم منصوبوں میں سے ایک ہے۔اس سے سعودی عرب کو عالمی سطح پر توانائی کے شعبے میں اہم مقام دلانے میں مدد ملے گی اور ہُنرمند افرادی قوت کے لیے روزگار کے ہزاروں مواقع پیدا ہوں گے‘‘۔

اس موقع پر سعودی آرامکو کے صدر اور سی ای او امین ایچ ناصر نے کہا کہ ’’ شاہ سلمان توانائی پارک سے ترقی کا ایک نیا دور شروع ہوگا۔یہ خطے کی معیشتوں میں ایک مرکزی گیٹ وے کا کردار ادا کرے گا۔ہم سپارک میں اپنے شراکت داروں کے ساتھ تعاون کے منتظر ہیں‘‘۔

سپارک کی تکمیل کے بعد اس سے سعودی عرب کی مجموعی قومی پیداوار ( جی ڈی پی) میں سالانہ 6 ارب ڈالرز کا اضافہ ہوگا اور بالواسطہ یا بلاواسطہ ملازمتوں کے کم سے کم ایک لاکھ مواقع پیدا ہوں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں