.

سوڈان کی اسرائیل کو فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت کی تردید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوڈان کی حکومت نے وضاحت کی ہے کہ اس نے اسرائیل کو فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی۔ اس حوالے سے ذرائع ابلاغ میں آنے والی تمام خبریں بے بنیاد ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سوڈان کی سول ایوی ایشن اتھارٹی کے ترجمان عبدالحافظ عبدالرحیم نے ایک پریس بیان میں کہا کہ اسرائیل کا کوئی ہوائی جہاز سوڈان کی فضائی حدود سے نہیں گذرا اور نہ ہی کوئی طیارہ سوڈانی وزارت خارجہ اور سول ایو ایشن اتھارٹی کی اجازت کے بغیر گذر سکتا ہے۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو نے کہا تھا کہ ان کے ہوائی جہاز اب سوڈان کی فضا سے گذر کر جنوبی امریکا جاسکتے ہیں۔

تل ابیب میں سفارت کاروں سے بات کرتے ہوئے صہیونی وزیراعظم نے کہا کہ سوڈان کی فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت حاصل کرنے میں چاڈ نے اسرائیل کی مدد کی ہے۔ انہوں نے چاڈ کے صدر ادریس دیبی سے اس حوالے سے بات کی تھی۔

اسرائیل اور چاڈ کے درمیان 1972ء سے تعلقات ختم ہوگئے تھے جو گذشتہ ماہ بحال ہوئے ہیں۔

رواں سال اسرائیلی اخبار'یدیعوت احرنوت'اور متعدد سوڈانی ویب سائیٹس پر یہ دعویٰ سامنے ایا تھا کہ کینیا کی حکومت نے سوڈان سے باضابطہ طور پر کہا ہے کہ وہ اس کے مسافر طیاروں کو اسرائیل کے سفر کے دوران اپنی فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت فراہم کرے۔ نیروبی اور تل ابیب میں 16 سال کے بعد سنہ 2019ء سے ہفتے میں دوپروازیں چلانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔کینیا کی درخواست پرسوڈان کی طرف سے کوئی رد عمل سامنے نہیں آیا۔