.

یورپی عدالت نے حماس کو دہشت گردی کی فہرست سے نکالنے کی درخواست مسترد کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یورپ کی ایک عدالت نے فلسطینی تنظیم 'حماس' کی طرف سے جماعت پر عایدہ کردہ پابندیاں اٹھانے کے حوالے سے دی گئی درخواست مسترد کر دی ہے۔

برسلز میں‌ قائم ایک عدالت نے حماس کی طرف سے دی گئی درخواست مسترد کر دی۔ اس درخواست میں عدالت سے اپیل کی گئی ہے تھی وہ حماس کو دہشت گردی کی فہرست سے نکالے اور یورپی ممالک میں اس کے منجمد کیے گئے اثاثے بحال کرے۔ تاہم عدالت نے درخواست ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کر دی۔

خیال رہے کہ سنہ 2007ء میں فلسطین کے علاقے غزہ پر حکومت کرنے والی تنظیم حماس پر نائن الیون کے حملوں کے بعد یورپ میں پابندیاں عاید کر دی تھیں۔

خیال رہے کہ حماس اور یورپی ممالک کے درمیان قانونی جنگ کا یہ آخری مرحلہ ہے جس میں حماس کو ایک بار پھر ناکامی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ حماس طویل عرصے سے یورپ میں پابندیاں اٹھائے جانے کے لیے کوشاں ہے۔

گذشتہ روز برسلز کی عدالت نے حماس کی اپیل مسترد کر دی۔ اس سے قبل 2010ء، 2014ء اور 2017ء میں‌ یورپی ملکوں کی عدالتوں نے حماس کی اپیلیں مسترد کر دی تھیں۔