شام میں لڑائی عالمی جنگ سے بھی طول پکڑ گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شام کے لیے اقوام متحدہ کے سبکدوش ہونےوالے مندوب اسٹیفن دی میستورا نے شام میں آئین سازکمیٹی کی تشکیل میں ناکامی کا اعتراف کیا ہے۔ سلامتی کونسل کے اجلاس سے الوداعی خطاب میں دی میستورا کا کہنا تھا کہ شام میں لڑائی دوسری عالمی جنگ سے بھی زیادہ طول پکڑ گئی۔

انہوں نے جہا کہ جنیوا میں ہونے والے مذاکراتی ادوار میں جن امور پراتفاق رائےطے پایا تھا وہی شام ہے کے بحران کے حل کی اساس بن سکتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ میں‌شام میں اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی کی حیثیت سے چار سال چار ماہ کام کیا۔ یہ عرصہ پہلی عالمی جنگ سے بھی زیادہ ہے۔ شامی قوم کی مصیبت ساڑھے سات سال سے بھی تجاوز کرگئی ہیں جو کہ دوسری عالمی جنگ سے بھی زیادہ ہے۔

دی میستورا کا کہنا تھا کہ شام میں جنگ کی وجہ سے وحشت، بربریت اورخون خرابہ ہے۔ اس جنگ کو ختم کرنے کے لیے میری،تمہاری اور باقی سب کی کوششیں ناکام ہوئی ہیں اور ہم روایتی جنگ کی منطق ختم کرنے میں ناکام ہے مگرہم جنگ کے خاتمے کے قریب ضرور پہنچ گئے۔


مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں