.

مشرقی شام میں عالمی فوج کے حملوں میں جمعہ کے روز 30 شہری جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مشرقی شام میں 'داعش' کے خلاف امریکا کی قیادت میں عالمی اتحادی فوج کے تازہ حملوں میں کم سے کم 30 افراد جاں بحق ہو گئے۔

شام میں انسانی حقوق کی صورت حال پر نظر رکھنے والے ادارے 'سیرین آبزرویٹری' کے مطابق مششرقی شام میں 'داعش' کے زیر تسلط علاقوں پر جمعہ کے روز کیے گئے فضائی حملوں میں 30 افراد مارے گئے۔

انسانی حقوق گروپ کے مطابق بمباری سے داعشی جنگجوئوں کے خاندان کے 14 افراد اور 8 بچے جاں بحق ہوئے، تاہم ان حملوں میں براہ راست جنگجوئوں کو زیادہ نقصان نہیں‌ پہنچا۔

خیال رہے کہ مشرقی شام میں یہ بمباری امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے شام سے فوج کے انخلاء کے اعلان کے 48 گھنٹے کے بعد کیے گئے۔ شام سے امریکی فوج کی واپسی کے اعلان کو داعش کے خلاف جاری کارروائی کے حوالے سے نقصان دہ سمجھا جا رہا ہے۔

انسانی حقوق آبزر ویٹری کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمان نے بتایا کہ جمعہ کے روز عالمی اتحادی فوج کی بم باری کے نتیجے میں الشعفہ کے مقام پر 27 افراد مارے گئے۔ ان میں جنگجوئوں کے خاندان کے 14 افراد بھی شامل ہیں۔