.

انڈونیشیا میں سونامی کے نتیجے میں 222 افراد ہلاک اور 800 زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

انڈونیشیا میں جاوا اور سماٹرا جزیروں کے بیچ آبنائے سُندا کے اطراف واقع علاقوں میں ہفتے کے روز سونامی طوفان کے نتیجے میں 222 افراد ہلاک اور 800 سے زیادہ زخمی ہو گئے ہیں۔

انڈونیشیا کے قدرتی آفات سے نمٹنے کے ادارے کے ترجمان سوتوبو بورو نوگروہو نے اتوار کو بتایا کہ ہفتے کی شب 9:30 پر آنے والی اس آفت کے دوران سیکڑوں گھر تباہ ہو گئے اور 28 افراد ابھی تک لاپتا ہیں۔

اس ادارے کے مطابق ہفتے کی شب پیدا ہونے والی سونامی کی لہریں آبنائے سُندا میں "انک کراکاٹوا" جزیرے میں آتش فشاں پھٹنے کا نتیجہ ہوسکتی ہیں۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ ہلاکتوں کی تعداد میں اضافے کا اندیشہ ہے۔

انک کراکاٹو جزیرہ انڈونیشیا میں سرگرم 127 آتش فشانوں میں سے ایک ہے۔

واضح رہے کہ انڈونیشیا 17 ہزار چھوٹے بڑے جزائر پر مشتمل ملک ہے جو بحر الکاہل میں "آتشی انگشتری" پر واقع ہے۔ یہاں مسلسل زلزلے اور آتش فشاں کے پھٹنے کا خطرہ رہتا ہے۔

رواں سال 28 ستمبر کو 7.5 شدت کے زلزلے کے بعد آنے والے سونامی نے انڈونیشیا کے جزیرے سولاویسی کے شہر پالو کو اپنی لپیٹ میں لے لیا تھا۔ اس کے نتیجے میں دو ہزار سے زیادہ افراد ہلاک اور پانچ ہزار لاپتا ہو گئے تھے۔