.

ایران کے ساتھ انسانی ضرورت کے سامان کے سوئس چینل پر امریکا متفق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوئٹرزلینڈ نے ایران پر امریکی پابندیوں کے بعد تہران کے ساتھ بنیادی انسانی ضرورت کے سامان کی ترسیل کے لیے متبادل مالیاتی چینل کا پروگرام تشکیل دیا ہے۔ دوسری جانب امریکا نے سوئٹرزلینڈ کے انسانی ضرورت کے سامان کے اس پروگرام سے اتفاق کیا ہے۔ خیال رہے امریکا اور یورپ ایران پر اقتصادی پابندیوں کے معاملے میں الگ الگ موقف رکھتے ہیں۔

اخبار فائننشل ٹائمز' کے مطابق سوئٹرزلینڈ ایران کے ساتھ بنیادی انسانی ضرورت کے سامان کی ترسیل کے ایک چینل کا آغاز کرنے کے قریب ہے۔ اس پروگرام کے تحت ایران کو خوراک، ادویات اور طبی آلات کی فراہمی میں سرگرم کمپنیوں کو ایران کے ساتھ کاروبار کی اجازت ہوگی۔

کسی یورپی ملک کا یہ پہلا ایسا متبادل مالیاتی پروگرام ہے جسے امریکا نے موافقت کا عندیہ دیا ہے۔

امریکا اور سوئٹرزلینڈ کے درمیان جاری رہنے والے مذاکرات میں انسانی امداد ایک حساس موضوع رہا ہے۔ یہ پروگرام ایک ایسے وقت میں تشکیل دیاگیا ہے جب دوسری جانب یورپی ملکوں کی طرف سے ایران کے ساتھ تجارت کو وسعت دینے کے ایک نئے منصوبے پر کام جاری ہے۔

امریکا کے ایران کے ساتھ کاروباری تعلقات ختم کرنے کے اعلان کے بعد سوئٹرزلینڈ نے تہران کو انسانی امداد کی فراہمی جاری رکھنے کے لیے مسلسل مذاکرات کیے ہیں۔ امریکا نے یورپی یونین کے موقف کی مخالفت کی ۔ یورپ ایران کے ساتھ جوہری معاہدے کو برقرار رکھنے کے ساتھ تہران کے ساتھ وسیع پیمانے پر تجارتی سرگرمیاں جاری رکھنے کے لیے بھی کوشاں ہے۔

سوئس اقتصادی امور کے عہدیداروں نے برطانوی اخبار کو بتایا کہ حکومت ایران کو انسانی ضرورت کا سامان مہیا کرنے کے لیے سنجیدہ کوششیں کررہا ہے۔ بہت جلد ہم اس پروگرام کا آغاز کریں‌گے تاہم اس کی تاریخ نہیں دی جاسکتی۔