.

ڈیجیٹل کرنسی: امریکی پابندیوں کو چکمہ دینے کے لیے ایران کی نئی کاوش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی میڈیا کے مطابق کانگریس میں رواں ہفتے پیش کی جانے والی ایک قرار داد پر غور کیا جا رہا ہے۔ قرار داد کا مقصد ایران پر سخت پابندیاں عائد کرنا ہے کیوں کہ تہران امریکی پابندیوں سے بچنے کے لیے خصوصی ڈیجیٹل کرنسی جاری کرنے کے قریب ہے۔

ڈیجیٹل کرنسیوں سے متعلق ویب سائٹcoindesk کے مطابق گزشتہ چند ماہ کے دوران امریکا میں قانون سازوں نے خبردار کیا ہے کہ ایرانی حکومت وینزویلا کے نقش قدم پر چلتے ہوئے کوڈڈ کرنسی استعمال کرنا چاہتی ہے تا کہ اقتصادی اور تیل کے سیکٹر پر پابندی سے بچا جا سکے۔

سینیٹر ٹیڈ کروز کی جانب سے پیش کی جانے والی مذکورہ قرار داد میں اُن افراد پر پابندیاں عائد کرنے کی تجویز پیش کی گئی ہے جو ڈیجیٹل کرنسی تیار کرنے کے سلسلے میں دانستہ طور پر ایران کو فنڈنگ، خدمات یا تکنیکی سپورٹ پیش کر رہے ہیں۔

یہ اقدام ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے مئی 2018 میں ایرانی جوہری معاہدے سے علاحدگی کے فیصلے کے سلسلے میں سامنے آیا ہے جس کو جامع مشترکہ ورکنگ پلان (JCPOA) کا نام دیا گیا۔

اس سے قبل ایران نے اعلان کیا تھا کہ وہ ڈیجیٹل کرنسی کے اجرا کی جانب جا رہا ہے۔ تہران اس کرنسی کو امریکا کی نئی پابندیوں سے فرار ہونے کے واسطے استعمال میں لا سکتا ہے۔

ایرانی پارلیمنٹ میں اقتصادی کمیٹی کے سربراہ محمد رضا پور ابراہیمی یہ کہہ چکے ہیں کہ کوڈڈ ڈیجیٹل کرنسی بین الاقوامی تجارت میں ڈالر کے غلبے سے چھٹکارہ حاصل کرنے میں مدد گار ثابت ہو سکتی ہے۔

امریکا نے رواں ماہ اُن ایرانی ہیکروں پر پابندیاں عائد کر دیں جو ایرانی نظام کے سکیورٹی اداروں کے مفاد میں کام کر رہے ہیں۔ یہ لوگ امریکی ویب سائٹوں اور نیٹ ورکس کو ہیک کرنے پر تاوان وصول کرتے ہیں۔