.

لیبیا: الشرارہ آئیل فیلڈ بند ، 85 سو بیرل تیل یومیہ کا نقصان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا نے الشرارہ آئیل فیلڈ کو بند کردیا ہے جس سے اس کو یومیہ ساڑھے آٹھ ہزار بیرل تیل کا نقصان ہوگا۔

الشرارہ لیبیا کی سب سے بڑی آئیل فیلڈ ہے ۔اس پر 8 دسمبر کو قبائلیوں ، مسلح مظاہرین اور ریاست کے ملازم محافظوں نے قبضہ کر لیا تھا۔ وہ تن خواہوں کی ادائی اور ترقیاتی فنڈز دینے کا مطالبہ کررہے تھے۔

لیبیا کی نیشنل آئیل کارپوریشن ( این او سی)نے کہا ہے کہ اس آئیل فیلڈ میں گذشتہ دو ہفتے کے دوران میں سکیورٹی کی تین مرتبہ خلاف ورزی کی گئی ہے اور لوٹ مار کی گئی ہے۔اس نے الشرارہ آئیل فیلڈ کو دوبارہ چالو کرنے کے لیے ہنگامی بنیاد پر سکیورٹی اقدامات کا مطالبہ کیا ہے۔اس فیلڈ سے یومیہ 315000 بیرل تیل نکالا جاتا ہے۔

لیبیا کی بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ حکومت اور این او سی نے گذشتہ ہفتے الشرارہ کے تحفظ کے لیے ایک سمجھوتے سے اتفاق کیا تھا۔ این او سی کے چئیرمین مصطفیٰ ثناء اللہ نے جمعرات کو خبردار کیا ہے کہ اگر اس فیلڈ پر حملے جاری رہے تو الشرارہ کا سسٹم تباہ ہوسکتا ہے اور معیشت کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔

انھوں نے کہا کہ لیبیا کی جنوبی کمیونٹیوں کے جائز مطالبات اور تحفظات کو ہائی جیک کر لیا گیا ہے اور مسلح گروہ اس صورت حال سے ناجائز فائدہ اٹھا رہے ہیں۔وہ اس آئیل فیلڈ کو تحفظ دینے اور تمام لیبی عوام کے لیے دولت پیدا کرنے کے بجائے اس سے خود فائدہ اٹھانے اور تیل لوٹنے کی کوشش کررہے ہیں۔

لیبیا تیل برآمد کرنے والے ممالک کی تنظیم اوپیک کا رکن ملک ہے ۔اس نے پہلے خام تیل کی اپنی پیداوار کو تیرہ لاکھ بیرل یومیہ تک بڑھا یا تھا لیکن اب پھر اس کی یومیہ پیداوار میں کمی واقع ہوجائے گی۔