.

لندن نہیں جاؤں گا، ترک جاسوس مجھے قتل کرسکتے ہیں: باسکٹ بال کھلاڑی کاخدشہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسے آپ سفری فوبیا کا نام دیں یا جان کو درپیش حقیقی خطرہ یا کچھ اور ، ترکی سے تعلق رکھنے والے باسکٹ بال کے ایک معروف کھلاڑی نے نیویارک سے لندن کا سفر کرنے سے انکار کردیا ہے کیونکہ انھیں یہ خدشہ لاحق ہے کہ انقرہ کے جاسوس انھیں وہاں قتل کرنے کی کوشش کرسکتے ہیں۔انھوں نے اسی ماہ لندن میں واشنگٹن وزارڈز کے خلاف میچ کھیلنے کے لیے آنا ہے۔

ترکی کی قومی باسکٹ بال ٹیم کے کھلاڑی انس قنطر نے جب آخری مرتبہ سمندر پار سفر کیا تھا تو انھیں رومانیہ کے ایک ہوائی اڈے پر کئی گھنٹے تک حراست میں رکھا گیا تھا۔وہ امریکا میں جلا وطن علامہ فتح اللہ گولن کی تحریک سے اپنے تعلق کو چھپاتے نہیں ہیں۔انھوں نے 2016ء میں ترک صدر رجب طیب ایردوآن کے خلاف ناکام فوجی بغاوت کے بعد اپنے خاندان سے بھی ناتا توڑ لیا تھا اور امریکا چلے گئے تھے۔

انیس قنطر ترکی کی نیشنل باسکٹ بال ایسوسی ایشن کے ایک معروف کھلاڑی رہے ہیں۔ ترک حکومت نے ان کے خلاف وارنٹ گرفتاری جاری کررکھے ہیں اور ان کا پاسپورٹ بھی منسوخ کردیا ہے۔

انھوں نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا:’’ مجھے افسوس ہے، میں ترک صدر کی وجہ سے (لندن) نہیں جارہا ہوں۔مجھے وہاں قتل کیا جاسکتا ہے‘‘۔

قنطر نے مزید کہا ہے کہ’’ترکی کے لندن میں بہت سے جاسوس موجود ہیں۔میرے خیال میں مجھے وہاں قتل کیا جاسکتا ہے۔ یہ بہت ہی ناخوشگوار صورت حال ہوگی‘‘۔