.

دس برس کوما میں رہنے والی خاتون کے بطن سے بچے کی ولادت!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی ریاست ایریزونا میں پولیس تقریبا ایک دہائی سے کوما کی حالت میں رہنے والی ایک خاتون کے بطن سے بچے کی پیدائش پر جنسی تشدد کی جانچ کر رہی ہے۔وہ خاتون فینکس کے پاس ہیسیئنڈا ہیلتھ کيئر کے ذریعے چلائے جانے والے ایک کلینک میں زیرعلاج تھی۔

ہیسیئنڈا ہیلتھ کيئر نے اس بابت کوئی تفصیل جاری نہیں کی ہے تاہم اس نے کہا ہے کہ وہ اس 'انتہائی پریشان کن واقعے' سے واقف ہے۔ایک مقامی کمرشیئل براڈکاسٹ سٹیشن نے بتایا کہ بچہ تندرست ہے اور ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ سٹاف کو خاتون کے حاملہ ہونے کا علم نہیں تھا۔ بچہ پیدا کرنے والی خاتون کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے۔

فینکس پولیس کے ایک ترجمان نے بتایا کہ 'اس معاملے کی فی الحال جانچ ہو رہی ہے' تاہم اس نے اس بارے میں مزید تفصیلات بتانے سے گریز کیا۔ فینکس کے سی بی ایس سے ملحق کے پی ایچ او- ٹی وی نے بتایا کہ خاتون نے 29 دسمبر کو بچے کو جنم دیا۔

ذرائع کے حوالے سے اس نے کہا: 'ولادت سے پہلے کسی بھی سٹاف کو خبر نہیں تھی کہ زیر علاج خاتون حاملہ ہے۔' ذرائع نے بتایا کہ خاتون دن رات نگہداشت میں تھیں اور بہت سے لوگوں کی ان تک رسائی تھی۔ ذرائع نے بتایا کہ وہاں طریقۂ کار میں تبدیلی آئی ہے اور کسی خاتون مریض کے کمرے میں کسی مرد کے داخل ہونے کی صورت میں اس کے ساتھ کسی دوسری خاتون کا ہونا ضروری قرار دیا گیا ہے۔

ہیسیئنڈا ہیلتھ کيئر کا اپنی ویب سائٹ پر کہنا ہے کہ وہ 'طبی طور پر کمزور اور دائم المریض نوزائیدوں، بچوں اور نوجوانوں کے علاوہ ان لوگوں کا علاج کرتے ہیں جنھیں ذہنی اور دماغی معذوری ہے۔'