امریکی پابندیوں کے سبب ایران دباؤ کا شکار ہے : خامنہ ای کا اقرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایران کے سپریم لیڈر علی خامنہ ای کا کہنا ہے کہ امریکی پابندیاں ایران اور اس کے عوام پر دباؤ ڈال رہی ہیں۔ یہ بات بدھ کے روز خامنہ ای کی سرکاری ویب سائٹ پر بتائی گئی۔

امریکی صدر گزشتہ برس مئی میں جوہری معاہدے سے علاحدہ ہو گئے تھے۔ اس کے بعد تہران پر دوبارہ پابندیاں عائد کر دی گئیں۔

خامنہ ای کے مطابق "پابندیوں سے ملک اور عوام کو دباؤ کا سامنا ہے۔ امریکیوں کی جانب سے بڑی خوشی سے کہا جا رہا ہے کہ ایسی پابندیاں تاریخ میں اس سے قبل عائد نہیں کی گئیں۔ جی ہاں یہ غیر معمولی پابندیاں ہیں ... اور امریکیوں کو جس ہزیمت سے دوچار ہونا پڑے گا وہ بھی اس سے پہلے کبھی نہیں دیکھی گئی ہو گی"۔

تہران پر امریکی پابندیوں کا دوسرا پیکج 5 نومبر 2018 سے لاگو ہے۔ اس کے ضمن میں تہران کے تیل اور بینکنگ سیکٹر کو ہدف بنانے کے علاوہ 700 ایرانی شخصیات اور اداروں کو لپیٹ میں لیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں