.

حزب اللہ کے وینزویلا میں سونے کی کانوں میں ’وارے نیارے‘: سیاست دان کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

وینزویلا کے حزب اختلاف کے ایک سیاست دان نے انکشاف کیا ہے کہ لبنان کی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے ان کے ملک میں وارے نیارے ہیں اور وہ سونے کی کانوں کو کنٹرول کررہی ہے۔

رکن پارلیمان امریکو ڈی گریزیا نے میامی سے ہسپانوی زبان میں شائع ہونے والے اخبار دیاریو لاس امریکاس سے انٹرویو میں صدر نیکو لس مادورو کے کان کنی کے منصوبے اوری نوکو مائننگ کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔اس کے تحت وینزویلا کی ناقابل تجدید دھاتوں اور معدنی وسائل کو نکالا جا رہا ہے۔

وینزویلا میں دنیا میں سونے کے سب سے زیادہ ذخائر پائے جاتے ہیں۔ وہ سونے کے علاوہ دوسری قیمتی دھاتوں ، ہیروں سمیت معدنی وسائل سے مالامال ہے۔

ڈی گریزیا کا کہنا ہے کہ حزب اللہ اور کولمبیا میں جاری مسلح تنازع میں ملوث مارکسسٹ مسلح گروپ نیشنل لبریشن آرمی وینزویلا میں سونا نکالنے کے بڑ ے منصوبے پر کام کررہے ہیں۔

انھوں نے انکشاف کیا ہے کہ حزب اللہ کا متعدد خصوصی کانوں پر کنٹرول ہے اور ان سے حاصل ہونے والی رقوم کو وہ ایک رجیم کے آلہ کار کے طور پر دہشت گردی کی کارروائیوں کے لیے استعمال کررہی ہے۔ان کا اشارہ ایران کی جانب تھا جو حزب اللہ کو مختلف ممالک میں اپنی بغل بچہ اور آلہ کار مسلح تنظیم کے طور پرا ستعمال کررہا ہے۔

ڈی گریزیا نے کہا کہ صدر مادورو کا کان کنی کا منصوبہ دراصل روسی ، ترک اور چینی مذاکرات کاروں کو مطمئن کرنے اور ان سے نقد رقوم کی وصولی کے لیے تھا۔

واضح رہے کہ مادورو کی گذشتہ سال مئی میں دوسری صدارتی مدت کے لیے انتخابات میں کامیابی کو عالمی برادری نے فراڈ پر مبنی قرار دیا تھا لیکن روس ، ترکی اور چین نے انھیں انتخاب جیتنے پر مبارک باد دی تھی ۔