.

سلامتی کونسل: یمن میں جنگ بندی کے مبصر مشن کے حوالے سے ووٹنگ آج ہو گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ میں سفارتی ذرائع نے توقع ظاہر کی ہے کہ سلامتی کونسل چھ ماہ کے لیے ایک مبصر مشن کی تشکیل پر آمادہ ہو جائے گی ،،، یہ مشن یمن میں فائر بندی اور متحارب فورسز کے انخلا کے عمل کی نگرانی کرے گا۔

اس سلسلے میں برطانیہ کی جانب سے پیش کی گئی قرار داد پر آج سلامتی کونسل میں رائے شماری ہو گی۔ قرار داد کے تحت مبصر مشن میں 75 ارکان تک شامل کیے جا سکیں گے۔

ان غیر مسلح مبصرین کو چھ ماہ کے لیے الحدیدہ شہر اور اس کی بندر گاہ کے علاوہ الصليف اور راس عيسى کی بندرگاہوں پر بھیجا جائے گا۔ یہ تمام جگہائیں باغی حوثیوں کے قبضے میں ہیں۔

ادھر اردن نے اقوام متحدہ کی سرپرستی میں یمن کی حکومت اور حوثی ملیشیا کے درمیان اجلاس کی میزبانی پر آمادگی کا اظہار کیا ہے۔ اجلاس میں یمن میں قیدیوں کے تبادلے پر بات چیت ہوگی۔

دوسری جانب حوثی ملیشیا نے گزشتہ ماہ سویڈن معاہدے کو قبول کرنے پر پچھتاوے کا اظہار کیا ہے۔ باغیوں کی غیر تسلیم شدہ حکومت کے ایک وزیر حسن زید کا کہنا ہے کہ ان کی جماعت کا سویڈن معاہدے پر آمادہ ہونا ایک تزویراتی غلطی ہے کیوں کہ اس طرح حوثیوں نے عالمی برادی اور اقوام متحدہ میں انسانی پہلوؤں سے بہت سے کارڈز کھو دیے ہیں۔