.

امریکا اور اسرائیل کا مشترکہ بیلسٹک میزائل شکن نظام کا کامیاب تجربہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا اور اسرائیل نے بیلسٹک میزائل شکن نظام'حیٹس 3' کا کامیاب تجربہ کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

امریکی اور اسرائیلی وزارت دفاع کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ دونوں مُلکوں نے اسرائیل کے فضائی اڈوں پرنصب بیلسٹک میزائل شکن نظام کا کامیاب تجربہ کیا ہے۔

امریکا اور اسرائیل کی جانب سےیہ کامیاب تجربہ ایک ایسے وقت میں‌کیا گیا ہے جب دوسری جانب اسرائیل نے شام میں ایرانی ملیشیا پرحملوں میں‌بھی اضافہ کردیا ہے۔ تازہ حملوں میں ایرانیوں سمیت 21 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

سیرین ہیومن رائٹس آبزر ویٹری کےمطابق اسرائیلی جنگی طیاروں‌نے دمشق میں متعدد مقامات پر ایران اور شام کی فوجی تنصیبات کو نشانہ بنایا۔

اسرائیل نے اپنے فوجی فضائی اڈوں پردو سال قبل "ایرو 3" نظام نصب کیا تھا تاکہ اسرائیل کی فضاء میں داخل ہونے والے کسی بھی بیلسٹک میزائل کو فضا ہی میں تباہ کیا جاسکے۔

اسرائیلی وزارت دفاع کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ فضاء سے ایک میزائل داغا گیا جسے "ایرو 3" سسٹم کے راڈار کی مدد سے شناخت کرنے کے بعد اسے کامیابی سے مار گرایا گیا۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ یہ تجربہ میزائل شکن نظام کے ترقی یافتہ پروگرام کےتحت نئی نسل کے لیے ایک تحفہ ہے اور اسرائیل کی آپریشنل صلاحیت کے میدان میں غیرمعمولی کامیابی ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہےکہ 'ایرو' دفاعی نظام اسرائیلی دفاع میں مرکزی اہمیت اختیار کرچکا ہے۔