واشنگٹن میں زیر حراست ایران کے سرکاری ٹی وی کی میزبان مرضیہ ہاشمی کی رہائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

امریکا کے دارالحکومت واشنگٹن میں گذشتہ دس روز سے جیل میں زیر حراست ایران کے سرکاری ٹیلی ویژن کی ایک معروف خاتون اینکر کو رہا کردیا گیا ہے۔

59 سالہ مرضیہ ہاشمی کو 13 جنوری کو ریاست میسوری کے شہر سینٹ لوز سے وفاقی ایجنٹوں نے حراست میں لیا تھا۔وہ ایران کے پریس ٹی وی نیٹ ورک کی انگریزی زبان کی سروس کے لیے کام کرتی ہیں۔ان کے بیٹے کے مطابق انھوں نے نیو اورلینز کے علاقے میں اپنے رشتے دار وں سے ملاقات کے بعد ’’ سیاہ فام زندگیاں بھی اہمیت‘‘ کی حامل ہیں ، کے موضوع پر ایک دستاویزی فلم کے لیے عکس بندی کی تھی۔انھیں بعد میں واشنگٹن منتقل کر دیا گیا تھا اور وہ تب سے زیر حراست ہی تھیں۔

وہ واشنگٹن میں امریکا کے ایک وفاقی جج کی عدالت میں ہفتے میں دو مرتبہ پیش ہوتی رہی ہیں۔عدالتی دستاویزات کے مطابق انھیں گرینڈ جیوری کے روبرو بیانات کے بعد فوری طور پر رہا کردیا جائے گا ۔ایک عینی شاہد کے مطابق عدالتی دستاویزات میں ان کے خلاف دائر فوجداری کیس کی تفصیل موجود نہیں ہے۔

واضح رہے کہ امریکا کے وفاقی قانون کے تحت جج صاحبان فوجداری مقدمے کے کسی بھی گواہ کو گرفتار کرنے کا حکم دے سکتے ہیں ۔الّا یہ کہ حکومت یہ بات ثابت کردے کہ ان کا ملک سے پرواز کے ذریعے بھاگ جانے کا خطرہ ہے ، وہ واپس نہیں آئیں گے اور یہ کہ ان کی گواہی غیرمعمولی اہمیت کی حامل ہے۔قانون کے تحت ایسے گواہوں کو گرفتاری کے فوری بعد بیان قلم بند ہونے کی صورت میں رہا کیا جاسکتا ہے۔

مرضیہ ہاشمی کے کیس سے آگاہ ایک شخص نے بتایا ہے کہ انھوں نے اپنی قانونی ذمے داری کو پورا کردیا ہے اور ا س کے بعد انھیں رہا کردیا گیا ہے۔ ہاشمی امریکی شہری ہیں ۔وہ تہران میں رہتی ہیں ۔ وہ سال میں ایک مرتبہ امریکا میں اپنے خاندان سے ملاقات کے لیے واپس جاتی ہیں۔

ان کے بیٹے حسین ہاشمی سے جب ایسوسی ایٹڈ پریس ( اے پی) نے پوچھا کہ کیا ان کی والدہ کسی مجرمانہ سرگرمی میں ملوث رہی ہیں اور یا وہ کوئی ایسی بات جانتی ہیں جس کی بنا پر انھیں کسی جرم میں ماخوذ کیا جاسکتا ہے؟ تو انھوں نے اس کے جواب میں کہا: ’’ ہمارے پاس ان خطوط پر کوئی معلومات نہیں ہیں‘‘۔

ایرانی ٹی وی نیٹ ورک نے ایک بیان میں کہا ہے کہ مرضیہ ہاشمی اور ان کا خاندان اس معاملے کو تسلیم نہیں کرسکتے اور وہ یہ نہیں چاہتے ہیں کہ آیندہ کسی اور شخص کے ساتھ بھی اس طرح کا معاملہ پیش آئے ۔اس نے مزید کہا کہ ہاشمی جمعہ کو اپنی گرفتاری کے خلاف احتجاج تک واشنگٹن ہی میں رہیں گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں