.

سوڈان: اپوزیشن کی جانب سے "ہفتہِ احتجاج" کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوڈان میں پروفیشنلز ایسوسی ایشن اور سیاسی اتحادوں نے ملک میں پورے ہفتے مظاہروں کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ خرطوم اور دیگر صوبوں میں شب و روز احتجاجی ریلیاں نکالی جائیں۔

سوڈانی پروفیشنلز ایسوسی ایشن اور اتحادی سیاسی قوتوں نے اپنے دستخط شدہ "اعلان حریت اور تبدیلی" میں کہا ہے کہ ان کا مقصد حکومت کا برطرفی، اس کے اداروں کا خاتمہ، 4 برس کے لیے نگراں حکومت کی تشکیل اور ایسی ریاست کی تشکیل ہے جہاں شہریوں اور قانون کو بالا دستی حاصل ہو۔

دوسری جانب عینی شاہدین نے برطانوی خبر رساں ایجنسی ’’رائیٹرز‘‘ کو بتایا کہ ام درمان شہر میں نماز جمعہ کے بعد واپس جانے والے نمازیوں پر آنسو گیس کی شیلنگ کر دی۔ عینی شاہدین کے مطابق احتجاج کنندگان آزادی کے نعرے لگا رہے تھے۔

خبر رساں ایجنسی کا کہنا ہے کہ اپوزیشن جماعت حزب الامہ کے سربراہ اور سابق وزیراعظم الصادق المہدی کی جانب سے احتجاجی تحریک کی حمایت کے بعد سوڈان میں مظاہروں کا دائرہ کار وسیع ہو گیا ہے.