.

روس، امریکا کے ساتھ جوہری معاہدے پر عمل کرے: نیٹو کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

معاہدہ شمالی اوقیانوس (نیٹو) نے اعلان کیا ہے کہ روس اُس مرکزی جوہری معاہدے کی خلاف ورزی کر رہا ہے جو سرد جنگ کے زمانے میں طے پایا تھا۔ نیٹو نے ماسکو سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ آئندہ چھ ماہ کے دوران مذکورہ معاہدے کی پاسداری کی طرف واپس لوٹے۔

ادھر امریکا آج ہفتے کے روز سے اس معاہدے کی پاسداری کو معلق کر رہا ہے۔ واشنگٹن نے واضح کیا ہے کہ جوہری قوتوں کے اس معاہدے کی جانب روس کی عدم واپسی کا مطلب ہے کہ یہ سمجھوتا "ختم ہو جائے گا"۔

امریکا کے اعلان کے چند منٹوں کے بعد ہی نیٹو نے روس پر زور دیتے ہوئے کہا کہ "کہ وہ بقیہ چھ ماہ سے فائدہ اٹھاتے ہوئے معاہدے کی جانب واپس لوٹ کر مکمل پاسداری کو یقینی بنائے تا کہ اس معاہدے کو برقرار رکھا جا سکے"۔

نیٹو کے ارکان کا کہنا ہے کہ اتحاد روس کی جانب سے میزائلوں کو ترقی دینے کے سکیورٹی اثرات کا مسلسل جائزہ لینے کا ارادہ رکھتا ہے۔ ارکان کے مطابق نیٹو اتحاد کی جانب سے دفاع اور جامع روک کو مؤثر بنانے کے واسطے ضروری اقدامات کیے جائیں گے۔

نیٹو نے باور کرایا ہے کہ اگر روس تمام جدید میزائل سسٹم تباہ کرنے میں ناکام رہا تو "ماسکو اس معاہدے کے خاتمے کا اکیلا ذمے دار ہو گا"۔