اردن آیندہ ہفتے یمنی فریقوں میں قیدیوں کے تبادلے پر مذاکرات کی میزبانی کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اردن آیندہ ہفتے یمن کی بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ حکومت اور ایران کے حمایت یافتہ حوثی شیعہ باغیوں کے درمیان قیدیوں کے تبادلے سے متعلق سمجھوتے پر مذاکرات کی میزبانی کرے گا۔

اردنی وزارت خارجہ کے ترجمان سفیان القدح نے ہفتے کے روز ایک بیان میں کہا ہے کہ اقوام متحدہ کی درخواست پر ارد ن نے یمنی فریقوں کے درمیان ان مذاکرات کی میزبانی سے اتفاق کیا ہے۔

یمنی صدر عبد ربہ منصور ہادی کے تحت حکومت اور حوثی باغیوں نے دسمبر کے اوائل میں سویڈن میں اقوام متحدہ کے زیر اہتمام مذاکرات میں قیدیوں کے تبادلے سمیت اعتماد کی فضا بحال کرنے کے بعض اقدامات سے اتفاق کیا تھا۔

تاہم اس سمجھوتے پر حوثی باغیوں کی جانب سے جنگ بندی کی مسلسل خلاف ورزیوں کی وجہ سے مکمل طور پر عمل درآمد نہیں کیا جاسکا ہے اور تشدد کےو اقعات کے پیش نظر اس پر عمل درآمد کی رفتار سست روی کا شکار ہے۔

دریں اثناء متحدہ عرب امارات کے وزیر مملکت برائے امور خارجہ انور قرقاش نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ حوثی باغیوں کو جنگ بندی سمجھوتے کی خلاف ورزیوں سے باز رکھنے کے لیے فوری طور پر اقدامات کرے۔انھوں نے سلسلہ وار ٹویٹس میں کہا ہے کہ حوثیوں نے جنگ بندی سمجھوتے پر عمل درآمد کے آغاز کے بعد سے اس کی کم سے کم ایک ہزار مرتبہ خلاف ورزی کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں