الحدیدہ سے متعلق مذاکرات کی میز سمندر میں کس لئے سجائی گئی؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

’’العربیہ‘‘ نیوز چینل کے نامہ نگار کے مطابق سویڈن معاہدہ پر عملدرآمد کی مانیٹرنگ کے لئے مشترکہ کوارڈی نیشن کمیٹی کا اجلاس ریٹائرڈ ڈچ جنرل پیٹرک کمائرٹ کی صدارت میں اتوار کے روز الحدیدہ بندرگاہ پر لنگر انداز’’واس اپالو‘‘ نامی بحری جہاز پر اتوار کے روز منعقد ہوا۔ اجلاس میں یمن کی آئینی حکومت اور اس کا تختہ الٹنے والے حوثی باغیوں کے نمائندے شریک ہوئے۔ اجلاس مقامی وقت صبح دس بجے شروع ہوا۔

کوارڈی نیشن کمیٹی کے مقرب ذرائع نے بتایا کہ حوثیوں کے نمائندے ’’واس اپالو‘‘ اجلاس شروع ہونے سے ایک گھنٹہ پہلے پہنچے۔ اس جہاز کو یو این مانیٹرنگ کمیٹی نے مبصر مشن کے لئے بطور ہیڈکوارٹر کرائے پر لیا ہے۔ اجلاس میں فائر بندی سے متعلق معاہدے پر عمل درآمد کے طریقہ کار پر غور سمیت الحدیدہ کی تینوں بندرگاہوں الصلیف، راس عیسی اور الحدیدہ سے باہر حوثی ملیشیا کی از سرنو تعیناتی اور متحارب فوج کے شہر سے باہر انخلاء اور محفوظ گذرگاہوں کو انسانی امداد کے لئے کھولنے جیسے امور پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

ہفتے کے روز ’’العربیہ‘‘ نامہ نگار نے اپنے مراسلے میں بتایا تھا کہ الحدیدہ سے متعلق سویڈن معاہدے پر عمل درآمد کرنے والی متشرکہ کوارڈی نیشن کمیٹی کے سبراہ جنرل پیٹرک کمائرٹ اتوار کے روز یمنی حکومت اور حوثی ملیشیا کے نمائندوں سے سمندر میں موجود اپنے بحری ہیڈکوارٹر میں ملاقات کریں گے۔ یہ اقدام یو این مشن کے نمائندوں کی زندگی کو الحدیدہ میں اجلاس کے حوالے سے خدشات کے بعد اٹھایا گیا کیونکہ حوثی ملیشیا نے یمنی حکومت کے زیر نگین علاقے میں منعقدہ اجلاس میں شرکت سے معذرت ظاہر کی تھی۔

باخبر ذرائع نے بتایا کہ کوارڈی نیشن کمیٹی کے سمندر میں بحری جہاز پر اجلاس کی وجہ یو این مبصرین اور یمنی حکومت کے نمائندوں پر قاتلانہ حملوں کے لئے کی جانے والی فائرنگ بتائی جاتی ہے۔ ماضی میں جنرل پیڑک کے قافلے پر بھی فائرنگ ہو چکی ہے۔

یمن حکومت کے ترجمان راجح بادی نے بتایا کہ الحدیدہ سے متعلق مشترکہ کمیٹی کا اجلاس سمندر میں جہاز پر اس لئے منعقد ہو رہا ہے کیونکہ حوثی ملیشیا یمنی حکومت کے زیر نگین علاقے میں جانے سے گریزاں ہے۔ یاد رہے کہ مبصرین کا خیال ہے کہ سمندر میں ہونے والا یہ اجلاس جنرل کمائرٹ کی صدارت میں آخری جلسہ ہو گا کیونکہ اس کے بعد جنرل مائیکل لویسگار اگلے دو دنوں میں عدن پہنچنے والے ہیں جہاں وہ جنرل کمائرٹ کی جگہ کوارڈی نیشن کمیٹی کے سربراہ کی ذمہ داری سنبھالیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں