جنوبی سوڈان میں صدر کے خلاف بغاوت کی کوشش کے الزام میں جنرل پر مقدمہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

جنوبی سوڈان کی ایک فوجی عدالت میں فوج کے ایک جنرل کے عہدے کے افسر کے خلاف خیانت اور صدر سلفاکیر کے خلاف بغاوت کی کوشش کے الزام میں مقدمے کی باقاعدہ کارروائی کا آغاز کردیا گیا ہے۔

جنوبی سوڈان کی فوج کے ترجمان جنرل سانٹو ڈمیک کے مطابق جنرل اسٹیفن بوی رولنیانگ پر امن کو تباہ کرنے، خیانت، عسکری احکامات ماننے سے انکار جیسے الزامات عاید کیے گئے ہیں۔ جنرل لنیانگ کے خلاف مقدمہ کی سماعت 7 رکنی بنچ کر رہا ہے جس کی سربراہی آرمی چیف جنرل جوک ریاک خود کر رہےہیں۔

خیال رہے کہ جنرل بوی رولنیانگ کو گذشتہ برس مئی میں فوجی احکامات ماننے سے انکار اور جوبا میں واپس نہ آنے کے بعد گرفتار کیا گیا تھا۔ ترجمان نے کہا کہ جنرل بوی رولنیانگ نے فوجی احکامات کی نافرمانی کی۔ ان کے بریگیڈ میں شامل فوجیوں نے بغاوت اور انحراف کی کوشش کی تھی۔

مقدمہ کی سماعت آئندہ جمعرات تک ملتوی کردی گئی ہے۔ بوی کو وکیل کی اجازت دی گئی ہے۔ عدالتی بنج میں شامل عہدیدار رتبے میں ملزم سے جونیر ہیں۔ جنوبی سوڈان کے صدر سلفاکیر کے نائب ریاک مشار پر بھی حکومت کا تختہ الٹنے کی سازش کی منصوبہ بندی کا الزام عاید کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں