نئے امریکی وزیر دفاع کی غیر اعلانیہ دورے پر کابل آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکا کے نئے وزیر دفاع پیٹرک شنیہن پیر کی صبح غیر اعلانیہ دورے پر اچانک کابل پہنچ گئے۔ افغان دارالحکومت میں امریکا اور طالبان کے درمیان امن بات چیت جاری ہے۔

امریکی وزیر دفاع اپنے دورے میں افغان صدر اشرف غنی سے بھی ملاقات کریں گے۔ یاد رہے کہ طالبان تحریک ابھی تک افغان صدر کے کے ساتھ مذاکرات کو مسترد کرتی رہی ہے۔

وزیر دفاع کا منصب سنبھالنے کے بعد پیٹرک شنیہن کا یہ پہلا بیرونی دورہ ہے۔ انہوں نے سفر میں اپنے ساتھ موجود صحافیوں کے ایک چھوٹے گروپ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ "افغانستان سے متعلق بات چیت میں افغان حکومت کی شرکت اہم ہے"۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ خطے میں امریکا کے اہم سکیورٹی مفادات ہیں اور وہ زمینی قیادت سے بات چیت چاہتا ہے۔

پیٹرک شنیہن نے جیمز میٹس کی جگہ وزیر دفاع کا منصب سنبھالا۔ میٹس نے دسمبر میں ڈونلڈ ٹرمپ کی پالیسی کے حوالے سے اختلافات کے سبب استعفا دے دیا تھا۔


مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں