.

پاسداران انقلاب پرحملے کا الزام امریکا اور اتحادیوں کے سرتھوپنا 'شرمناک' ہے: پومپیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیوں نے ایران کی طرف سے زاھدان شہر میں پاسداران انقلاب پرہونے والے مہلک حملے میں ملوث ہونے کا ایرانی دعویٰ مسترد کردیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ پاسداران انقلاب پرحملے کا الزام امریکااور اس کے اتحادیوں کے پر ڈالنا ایران کا شرمناک طرز عمل ہے۔

خیال رہے کہ بدھ کو ایران کے جنوب مشرقی شہر زاھدان میں پاسداران انقلاب کی ایک بس پر کار خود کش حملے کے نتیجے میں 27 پاسداران انقلاب ہلاک اور 13 زخمی ہوگئے تھے۔ ایران نے اس حملے کی ذمہ داری امریکا اور اسرائیل پرعاید کی تھی۔ زاھدان میں ہونے والے اس خونی حملے کی ذمہ داری 'جیش عدل' نامی ایک بلوچ عسکری گروپ نے قبول کی ہے۔ یہ تنظیم ایران میں اہل سنت کے مظلوم عوام اور بلوچ قوم کے حقوق کے لیے مسلح‌جدو جہد کررہی ہے۔

ایرانی وزیرخارجہ محمد جواد ظریف نے کہا تھا کہ پولینڈ کے شہر وارسا میں ایرانی مداخلت کے حوالے سے منعقدہ کانفرنس اور زاھدان میں پاسداران انقلاب پرحملے کو باہم مربوط کرنے کی کوشش کی تھی۔

امریکی وزیر خارجہ نے مائیک پومپیو نے فارسی ریڈیو'فردا' کو دیئے گئے انٹرویو میں کہا کہ امریکیوں کا زاھدان حملے سے قطعا کوئی تعلق نہیں ہے۔

انہوں‌نے کہا کہ یورپی ممالک جواد ظریف سے اس طرح کے شرمناک بیان کے بارے میں میونخ کانفرنس میں ضرور پوچھ تاچھ کریں گے۔

پومپیو کا کہنا تھا کہ جواد ظریف کو معتدل سمجھا جاتا ہے مگر زاھدان میں ہونے والے حملے کا الزام اسرائیل اور امریکا پر عاید کرنا کوئی اعتدال پسندی نہیں بلکہ یہ شرمناک طرز عمل ہے۔