سعودی عرب اور کویت میں نیوٹرل زون سے تیل پیداوار کی بحالی کے لیے جلد سمجھوتا متوقع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کے وزیر توانائی خالد الفالح نے اس توقع کا اظہا ر کیا ہے کہ اس سال کویت کے ساتھ ’’ غیر جانبدار علاقے ‘‘ ( نیوٹرل زون) سے تیل کی پیداوار کی بحالی کے لیے سمجھوتا طے پاجائے گا۔

انھوں نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا :’’ مجھے امید ہے اور میں پُراعتماد ہوں کہ 2019ء میں اس مسئلے کو حل کر لیا جائے گا‘‘۔ ان سے یہ سوال پوچھا گیا تھا کہ سعودی عرب اور کویت کے درمیان نیوٹرل زون سے تیل کی پیداوار کی بحالی سے متعلق سمجھوتا کب طے پا سکتا ہے۔

سعودی وزیر توانائی نے منگل کے روز امیرِ کویت شیخ صباح الاحمد الصباح کے ساتھ ملاقات کی تھی۔نیوٹرل زون میں واقع تیل کے کنووں سے اگر پیداوار بحال ہوتی ہے تو یہاں سے سعودی عرب اور کویت یومیہ پانچ ، پانچ لاکھ بیرل تیل نکالیں گے۔

سعودی عرب اور کویت کے درمیان سرحدی علاقے میں 5770 مربع کلومیٹر کا قطعہ اراضی نیوٹرل زون یا تقسیم شدہ زون کہلاتا ہے۔2 دسمبر 1922ء کو جب عقیر کنونشن کے تحت دونوں ملکوں میں سرحدی حد بندی کی گئی تھی تو اس علاقے کو ایسے ہی غیر شناختہ چھوڑ دیا گیا تھا اور اس کو کسی ایک ملک میں شامل نہیں کیا گیا تھا ۔اب یہ علاقہ دونوں ملکوں کی عمل داری میں ہے اور دونوں ہی یہاں موجود تیل کے کنووں سے مشترکہ طور پر پیداوار حاصل کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں