.

میانمار کے مزید پناہ گزینوں کو داخل نہیں ہونے دیں گے:بنگلہ دیش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بنگلہ دیش کی حکومت نے سلامتی کونسل سے کہا ہے کہ وہ میانمار سے مزید مسلمان پناہ گزینوں کو اپنے ملک میں آنے کی اجازت نہیں دے گا۔ بنگالی حکومت کا کہنا ہے کہ اس کے پاس پناہ گزینوں کا بوجھ اٹھانے کی مزید صلاحیت نہیں رہی۔ اس لیے میانمار سے مزید پناہ گزینوں کو قبول نہیں کیا جائے گا۔

خبر رساں اداروں کے مطابق بنگلہ دیش کی حکومت کی طرف سے یہ موقف ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب 18 ماہ قبل برما میں روہنگیا نسل کے مسلمانوں کی بڑی تعداد وحشیانہ فوجی کارروائیوں‌کے بعد فرار ہو کر بنگلہ دیش میں داخل ہوگئی تھی۔ بنگلہ دیش میں پناہ لینے والے روھنگیا مسلمانوں کی تعداد 7 لاکھ سے زیادہ ہے۔

اقوام متحدہ ، برطانیہ، امریکا اور دوسرے ممالک میانمار پر راکھین ریاست میں مسلمانوں کی نسل کشی کا الزام عاید کرتے ہیں تاہم میانما نے ان الزامات کی سختی سے تردید کی ہے۔

بنگلہ دیش کے وزیر خارجہ شہید الحق نے ایک بیان میں کہا کہ 'مجھے افسوس کے ساتھ سلامتی کونسل کو یہ بتانا پڑ رہا ہے کہ ان کا ملک میانمار کے مزید پناہ گزینوں کابوجھ نہیں اٹھا سکتا'۔

انہوں‌نے میانمار کی حکومت پر پناہ گزینوں کی واپسی کے حوالے سے بد عہدی کا الزام عاید کیا۔