بوتفلیقہ کی نامزدگی کےبعد الجزائر میں مظاہرے پھوٹ پڑے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

افریقی ملک الجزائر میں معمر صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ کی طرف سے پانچویں بار صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کے بعد ملک میں مظاہرے پھوٹ پڑے ہیں۔

خبر رساں اداروں کے مطابق صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ نے گذشتہ روز باقاعدہ طورپر 18 اپریل کو ہونے والے صدارتی انتخابات کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرادیئے۔

عبدالعزیز بوتفلیقہ کی طرف سے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کے بعد ملک میں بڑے پیمانے پر لوگ سڑکوں پر نکل آئے اور انہوں‌نے 20 سال سے اقتدار پر فائز عبدالعزیز بوتفلیقہ کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔

گذشتہ روز صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ نے اعلان کیا کہ وہ دوبارہ صدر منتخب ہونے کی صورت میں ملک میں وسیع پیمانے پر اصلاحات نافذ کریں گے۔ حالیہ ایام میں الجزائر میں ہونے والے مظاہروں کے موقع پر دارالحکومت میں پولیس کی بھاری نفری تعینات کی جاتی رہی ہے مگر گذژشتہ روز پولیس کی بہت کم تعداد دیکھی گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں