امریکا کی ترکی کو روسی دفاعی نظام'ایس 400' کی خریداری پر وارننگ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ اس نے ترکی کوخبردار کیا ہے کہ اگر اس نے روس سےفضائی دفاعی نظام'ایس 400' خریدنے کی پیش رفت کی تو امریکا'ایف 35'جنگی طیاروں کی تیاری کے مشترکہ معاہدے پر نظر ثانی پر مجبور ہوگا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان رابرٹ پالاڈینون نے ایک بیان میں کہا کہ ہم نے ترکی کو خبردار کیا ہے کہ اگر اس نے روس سے 'ایس 400' فضائی دفاعی نظام خریدا تو اس کے نتیجے میں امریکا بھی متبادل اقدامات کرے گا۔ ایسی صورت میں ترکی کےاشتراک سے 'ایف 35' جنگی طیاروں کی تیاری کے حوالے سے طے پایا معاہدہ منسوخ کردیا جائے گا۔اس کے علاوہ مستقبل میں ترکی کو امریکا کی طرف سے مزید اسلحہ کی فراہمی بھی مشکلات کا شکار ہوسکتی ہے۔

قبل ازیں یورپ میں امریکی سینٹرل کمانڈ کےسربراہ جنرل کوٹیز سکاپاروٹی نے کہا تھا کہ وہ امریکی حکومت مشورہ دیں گے کہ وہ ترکی کو سپر ٹیکنالوجی کے حامل 'F 35' طیاروں کی فروخت روک دے۔ اگر انقرہ ماسکو کےساتھ فضائی دفاعی نظام'ایس 400' کی خریداری کا معاہدہ کرتاہے تو امریکا کی طرف سے ترکی کو اسلحہ کی فراہمی روک دینا چاہیے۔

جنرل اسکاپاروٹی کا کہنا تھا کہ ترکی کو چاہیے کہ وہ 'ایس 400' دفاعی نظام کی خریداری پر نظر ثانی کرے ورنہ وہ امریکا کے 'ایف 35' جنگی طیاروں کی مضبوط دفاعی صلاحیت سے محروم ہوسکتا ہے۔

امریکی وزارت خارجہ نے دسمبر 2018ء کو ایک بیان میں کہا تھا کہ واشنگٹن ترکی کو ساڑھے تین ارب ڈالر مالیت کے پیٹریاٹ میزائل سسٹم کی فروخت کے لیے تیار ہے تاہم ترکی کے روس کے ساتھ 'ایس 400' دفاعی نظام کے حصول کے لیے مذاکرات کے بعد امریکا نے'ایف 35' طیاروں کی ترکی کے ساتھ ڈیل روک دی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں