.

چارعرب دولت مند جو اب عالمی ارب پتیوں کی فہرست میں نہیں رہے!

ایک سال میں عرب امراء کی دولت میں 60 ارب ڈالر کی کمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے مشہور جریدے'فوربز' نےاپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ سال 2019ء کی عالمی دولت مندوں کی فہرست میں عرب ممالک کے چار صاحب ثروت شخصیات کے نام شامل نہیں کئےگئے۔ اس فہرست میں پچھلے عرب ممالک کے 29 ارب پتی شامل تھے جب کہ رواں سال چار ارب پتیوں کو اس فہرست سے نکال دیاگیا جس کے بعد ان کی تعداد 25 رہ گئی ہے۔

جریدے کی رپورٹ کے مطابق گذشتہ سال کی نسبت رواں سال عرب ممالک کے ارب پتی تاجروں کی دولت میں 22 فی صد کمی آئی ہے۔ گذشتہ برس ارب پتیوں کی دولت میں 76 اعشاریہ 7 ارب میں کمی آئی جب عرب ممالک کی دولت میں 59 ارب 80 کروڑ ڈالر کی کمی آئی۔

عالمی سطح کے 10 ارب پتیوں میں 7 اماراتی شامل ہیں۔ دوسرے نمبر پر مصرکے6 تاجر شامل ہیں۔

اس فہرست سے نکلنے والے تاجروں میں کویتی ارب پتی فوزی الخرافی شامل ہیں۔ ان کی دولت ایک ارب 25 کروڑ ڈالر کےقریب ہے۔

عالمی ارب پتیوں کی فہرست سے نکلنے والوں میں بسام الغانم کا نام سامنے آیا ہے۔ وہ خلیج اول بنک کے سب سے بڑے سرمایہ کار سمجھے جاتےہیں۔ان کی دولت کا اندازہ ایک ارب 20 کروڑ ڈالر ہے۔

لبنانی وزیراعظم سعد حریری بھی اس عرب پتیوں کی عالمی فہرست میں نہیں رہے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق مصری ارب پتی ناصف ساویرس عرب ممالک کے امراء میں دولت کے اعتبار سے سر فہرست ہیں۔ان کی صافی دولت 6 ارب 40 کروڑ ہے جب کہ 2018ء میں ان کی دولت میں 20 کروڑ ڈالر کی کمی آئی۔

اماراتی ارب پتی ماجد الفطیم دولت و ثروت کے اعتبار سے دوسرے ارب پتی ہیں۔ان کی دولت کا اندازہ 5 ارب 10 کروڑ ڈالر ہے۔ گذشتہ برس ان کی دولت 4 ارب 60 کروڑ ڈالر ہے۔

متحدہ عرب امارات کے ارب پتی عبداللہ الغریر کی دولت 4 ارب 60 کروڑ ڈالر ہے۔ ان می دولت میں‌بھی کمی آئی۔ ایک سال قبل تک ان کی دولت 5 ارب 90 کروڑ ڈالر تھی۔

الجزائری ارب پتی یسعد ربراب چوتھے دولت مند ہیں۔ان کی دولت 3 ارب 70 کروڑ ڈالر ہے۔ ان کی دولت میں اضافہ ہوا ہے جو 2ارب 80 کروڑ سے بڑھ کر تین ارب 70 کروڑ تک پہنچ گئی۔

اومان میں سھیل بہوان 3 ارب 20 کروڑ ڈالرہے۔ ان کی دولت میں کمی آئی۔ پہلے ان کی دولت میں 3 ارب 90 کروڑ ڈالر تھی۔
مصری ارب پتی نجیب ساویرس دولت کے اعتبار سے عرب ممالک کی چھٹی امیر ترین شخصیت ہیں۔ ان کی دولت 4 ارب ڈالر کم ہونے کے بعد 2 ارب 90 کروڑ ڈالر پرآگئی۔

اماراتی ارب پتی عبداللہ الفطیم کی دولت 3 ارب 3 کروڑ ڈالر سے کم ہو کر 2 ارب 50 کروڑ ڈالر ہے۔

لبنان کے ارب پتی نجیب میقاتی کیدولت 2 ارب 50 کروڑ ڈالر سے بڑھ کر 2 ارب 80کروڑ تک جا پہنچی ہے۔

متحدہ عرب امارات کے حسین سجوانی کی دولت میں اضافہ ہوا۔ گذشتہ برس 2 ارب 40 کروڑ ڈالر سے بڑھ کر 4 ارب 10 کروڑ ڈالرتک جا پہنچی ہے۔

مصری ارب پتی محمود منصور کی دولت 2 ارب 30 کروڑ سے بڑھ کر 2 ارب 70 کروڑ ڈالر ہے۔