24 گھنٹوں میں حوثیوں نے فائر بندی معاہدے کی 65 خلاف ورزیاں کیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں آئینی حکومت کی رٹ بحالی میں مددگار عرب اتحاد کا کہنا ہے کہ حوثی باغیوں نے گذشتہ 24 گھنٹوں میں الحدیدہ میں سیز فائر معاہدے کی 65 مرتبہ خلاف ورزی کا ارتکاب کیا ہے۔ سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزیوں میں ہلکی نوعیت کے مختلف ہتھیاروں سمیت ھاون راکٹ اور کٹیوشیا میزائل تک استعمال کئے گئے ہیں۔ ان خلاف ورزیوں میں ایک شہری ہلاک جبکہ 12 دوسرے زخمی ہوئے۔

اسی ضمن میں برطانیہ نے حوثی ملیشیا سے الحدیدہ شہر سے باہر نکلنے کا مطالبہ دہرایا ہے تاکہ وہاں پر فوج کی نئے سرے سے تعیناتی ممکن ہو سکے۔ اس معاہدے پر دسمبر کے مہینے میں سویڈن میں اتفاق ہوا تھا۔

برطانوی حکومت کی ترجمان ایلسن کنگ نے یمنی بحران کے سیاسی حل کی ضرورت پر زور دیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہم مذاکرات کی حوصلہ افزائی اور حمایت کر رہے ہیں۔ عرب روزنامہ الشرق الاوسط میں ایلسن کنگ سے منقول بیان کے مطابق ’’ہم سمجھتے ہیں کہ حوثیوں کو الحدیدہ بندرگاہ چھوڑ دینی چاہئے، ایسا نہ ہوا تو لڑائی دوبارہ شروع ہو سکتی ہے جس کا یمنی عوام کو شدید نقصان پہنچے گا۔‘‘

برطانوی ترجمان کا کہنا تھا کہ ان کے ملک کو یمن میں ایرانی مداخلت سے متعلق دیرینہ خدشات ہیں۔ حوثیوں کو اسلحہ فراہمی اقوام متحدہ کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہے۔ ہمیں ایران کی جانب سے حوثیوں کو بیلسٹک فراہمی کی اطلاعات پر شدید دکھ ہے۔ ایسی اطلاعات علاقائی امن کے لئے خطرہ اور تنازع کو طول دینے کا باعث ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں